ورلڈ اردو ایسوسی ایشن کی طرف سے بین الاقوامی ریسرچ اسکالرس سیمینار

2
101
ورلڈ اردو ایسوسی ایشن کی طرف سے ایک روزہ بین الاقوامی ریسرچ اسکالرس سیمینار
ورلڈ اردو ایسوسی ایشن کی طرف سے ایک روزہ بین الاقوامی ریسرچ اسکالرس سیمینار

ورلڈ اردو ایسوسی ایشن کی طرف سے ایک روزہ بین الاقوامی ریسرچ اسکالرس سیمینار کا انعقادکیا گیا اس سیمینار کا مقصد بین الا اقوامی سطح پر کام کرنا ہے۔ورلڈ اردو ایسوسی ایشن ملکی و عالمی سطح پر اردو زبان وتہذیب کے فروغ کے لیے ایک ادارہ ہےایک تحریک ہے۔ ورلڈ اردوایسوسی ایشن نے بہت کم مدت میں ملکی و عالمی سطح پر اردو کے شیدائیوں کو متعارف کرانے کا سلسلہ جاری کیا ہے جس میں’’مہجری ادیبوں کا تعارفی سلسلہ‘‘سب سے مقبول و معروف سلسلہ بنتا جارہا ہے

۔ ساتھ ہی اردو کے دانشور وادیب سے ہر ہفتے ایک خصوصی لکچر بھی کرانے کا سلسلہ جاری ہے۔ ساتھ ہی ایسوسی ایشن نے اس ہفتے ریسرچ اسکالرس سیمینار کا انعقاد بھی کیا جس میں ملک و بیرون ملک کے تقریباً 200ریسرچ اسکالرس نے دل چسپی دیکھائی،اس طویل فہرست نے ایسوسی ایشن کو زیادہ احساس دلایا کہ نئی نسل کس قدر متحرک ہے۔ چناں چہ ایسوسی ایشن نے 40ریسرچ اسکالرس کو آن لائن مقالہ پڑھنے کی دعوت دی۔ ان چالیس مقالہ نگاروں میں سے ملک وبیرون ملک کی مشہور ومعروف یونیورسٹیز شامل ہیں۔ سیمینار کا عنوان ’’2019 کی تحقیقی، تنقیدی اور تخلیقی نگارشات: تبصرہ وتجزیہ‘‘ طے پایا تھا۔ اس سیمینار میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے پروفیسر شہاب عنایت ملک، صدر شعبۂ اردو، جموں یونیورسٹی نے شرکت کی، جب کہ صدور کی حیثیت سے پروفیسر سید شفیق احمد اشرفی، صدر شعبۂ اردو، خواجہ معین الدین چشتی اردو، عربی، فارسی یونیورسٹی، لکھنو اور ڈاکٹر محمد کاظم، دہلی یونیورسٹی، دہلی نے شرکت کی۔ اس سیمینار میں تعارفی کلمات پروفیسر خواجہ محمد اکرام الدین، چیرمین ورلڈ اردو ایسوسی ایشن نے پیش کیا۔ بیرون ممالک سے محترمہ تغرید البیومی، ازہر یونیوسٹی، قاہرہ، مصر، آذربائیجان سے جناب ابراہیموف، باکو اسٹیٹ یونیورسٹی کے علاوہ پاکستان اور ایران سے بھی کافی لوگوں نے نمائندگی کی۔ اس سیمینار کے کنوینر محمد رکن الدین اور کو کنوینرمہوش نور نے نظامت کی۔شرکا کی ایک طویل فہرست ہے۔مقالہ نگاروں کی فہرست میں انٹرنیشنل یونیورسٹی ایران، تہران یونیورسٹی، ایران،جامعہ مدراس، چنئی، جموں یونیورسٹی، کشمیر یونیورسٹی، ازہر یونیورسٹی، یونیورسٹی آف ایجوکیشن لاہور، یونیورسٹی آف لاہور، باکو اسٹیٹ یونیورسٹی، گورنمنٹ کالج، یونیورسٹی آف لاہور،جے این یو، دہلی یونیورسٹی، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی، بنارس ہندو یونیورسٹی، مولانا آزاد اردو یونیورسٹی، حیدرآباد سینٹرل یونیورسٹی، تریپتویونیورسٹی، پنجاپی یونیورسٹی، یونیورسٹی آف بردوان، وشو بھارتی یونیورسٹی، شانتی نکتن، پٹنہ یونیورسٹی، الہٰ آباد یونیورسٹی، عالیہ یونیورسٹی، کلکتہ، بھگونت سنگھ یونیورسٹی، اجمیر، روہیل کھنڈ یونیورسٹی، بریلی، ونوبھاوے یونیورسٹی، ہزاری باغ، عثمانیہ یونیورسٹی، حیدرآباد، گلبرگہ یونیورسٹی، گلبرگہ، رانچی یونیورسٹی،برکت اللہ یونیورسٹی، بھوپال کے ریسرچ اسکالرس نے اپنے اپنے مقالات پیش کیے۔ یہ سیمینار زوم ایپ کے ذریعے منعقد ہوا جو تقریباً سات گھنٹے تک چلتا رہا۔ اس سیمینار میں شرکا کی تعداد بھی بہت تھی جس میں اردو کے اساتذہ اورقلم کار شامل تھے۔ ایسوسی ایشن بہت جلد اس طرح کی دیگر سرگرمیوں کے ساتھ حاضر ہوگا۔

2 COMMENTS

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here