کووڈ19 کی وجہ سے شہر میسورمیں بڑھتی ہوئی اموات ۔

0
40
کووڈ19 کی وجہ سے شہر میسورمیں بڑھتی ہوئی اموات ۔
کووڈ19 کی وجہ سے شہر میسورمیں بڑھتی ہوئی اموات ۔
کووڈ 19کا قہر بڑھتا ہی جارہا ہے اور اس کووڈ 19کی وجہ سے اموات بھی کافی ہو رہی ہیں
کووڈ19 کی وجہ سے شہر میسورمیں بڑھتی ہوئی اموات کی وجہ سے  شکوک و شبہات جنم لے رہے ہیں ۔ ایس ڈی پی آئی نےکووڈ 19سے ہوئی اموات کی  وجوہات کا  اعلی سطح کی تحقیقات کا مطالبہ کیا
  میسور میں گذشتہ ایک ماہ میں کووڈ 19انفیکشن کی وجہ سے مجموعی طور پر 70 افراد کی موت ہوچکی ہے اور انفیکشن کی کل تعداد بڑھ کر 1،624 ہوگئی ہے۔ اس کے مقابلے میں ، اموات کی شرح 4.31 فیصد ہے ، جو ریاستی اوسط سے زیادہ ہے۔ 2.23٪ کا اضافہ ہوا۔ ہلاک شدگان کے اہل خانہ نے کووڈ 19 کے علاج پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے درج ذیل الزامات عائد کردیئے ہیں۔
1. متاثرہ افراد جب علاج کے لئے ہسپتال جاتے ہیں تو فوری طور پر جواب دینے میں تاخیر سے کام لیا جاتا ہے۔
2. ایسا لگتا ہے کہ مناسب علاج اور نگہداشت میں کوتاہی برتی جارہی ہے۔(Family). خاندانی ممبروں کو مریض کی حالت کے بارے میں مناسب معلومات فراہم نہیں کی جاتی ہیں ، اور اہل خانہ کے ساتھ ترش لہجے اور تشویش کا اظہار کیا جاتا ہے۔
4. کووڈ کچھ معاملات میں مثبت رہا ہے جہاں مریضوں کی موت ہوچکی ہے وہاں ایک برادری کی کثرت سے اموات ہوئیں ، جس کے نتیجے میں اس معاشرے میں اضطراب اور بے چینی پیدا ہوئی ہے جسکی وجہ سے ہماری  عوام میں بہت سے شکوک و شبہات پیدا ہوئے ہیں ۔ متاثرین میں سے کچھ کی ہلاکت طبی غفلت کی وجہ سے ہوئی ہے جس کے سبب فوت شدگان کے گھر والے اور دوست و احباب سنگین الزامات عائد کررہے ہیں ، جس سے مذکورہ شکوک و شبہات میں اضافہ ہوا ہے۔
ان تمام الزامات اور وجوہات کی بنا پر ، سوشل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) نے پریس کانفرنس کے ذریعے  مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر مطالبات کو پورا کریں۔
ایس ڈی پی آئی پارٹی کے مطالبات درج ذیل ہیں۔
1. میسور میں کووڈ ۔19 کی اموات کے معاملات پر ایک ریٹائرڈ جج کی سربراہی میں میڈیکل ایکسپرٹ کی کمیٹی کے تحت مناسب تحقیقات کروائیں۔
2. کوویڈ 19 مریضوں کے علاج اور دیکھ بھال میں غفلت اور بدعنوانی کے بہت سے الزامات ، اور اس کے انتظام کے لئے سی سی ٹی وی کو  نصب کیا جائے
. عوام سے تعلقات رکھنے والے  ذی شعور
 نمائندوں پر مشتمل کووڈ ۔19 کی منظم کمیٹی تشکیل دی جائے ۔
. نجی اسپتالوں میں کوویڈ ٹریٹمنٹ کے لئے کروڑوں روپے کمایا جارہا ہے  ، کووڈ کے علاج کی قیمت کی چارٹ مرتب کرے اور اسکو منظر عام پر لایا جائے ۔ اگر اس سے مقرر کردہ رقم  سے زیادہ ہو تو اس طرح کے اسپتال پر قانونی کارروائی کیا جائے ۔
5. میسور میں کووڈ۔ 19 کے علاج کے لئے مختص نجی اسپتالوں میں دستیاب بیڈز کی تعداد کا عوامی سطح پر اعلان کریں۔
پریس کانفرنس میں شریک لیڈران  :
• عبد المجید (قومی جندل  سکریٹری ، ایس ڈی پی آئی)
• کمارسوامی (ریاست  سکریٹری ، ایس ڈی پی آئی کرناٹک)
• امجد خان (اسٹیٹ کمیٹی ممبر ، ایس ڈی پی آئی کرناٹک)
• تبریز سیٹھ (ایس ڈی پی آئی ضلع میسور)

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here