روس کی ادیبہ ایرینا میکسی مینکو کاجے این یو میں استقبال

0
50
بول چال میں انگریزی زبان کی کثرت اردو کے لیے ایک بڑی رکاوٹ: دانشوران
روس کی ادیبہ ایرینا میکسی مینکو کاجے این میں استقبال

 

بول چال میں انگریزی زبان کی کثرت اردو کے لیے ایک بڑی رکاوٹ: دانشوران
صدا ٹوڈے ۔دہلی
ہندوستانی زبانوں کا مرکز، جے این یو، نئی دہلی اور ورلڈ اردو ایسوسی ایشن کے اشتراک سے ایک اہم نشست کا انعقاد کیا گیا جس میں روس کی مشہور ومعروف ادیبہ ، مترجم اور اردریڈیوبراڈ کاسٹر ایرینا میکسی مینکو کاجے این یو میں استقبال کیا گیا۔اس اہم نشست میں تعارفی کلمات پیش کرتے ہوئے پروفیسر خواجہ محمداکرام الدین نے روس میں اردوزبان کی صورت حال پرتبادلۂ خیال کرتے ہوئے کہا کہ محترمہ ایرینا میکسی مینکونے روس میں اردو زبان کی خدمت کئی جہتوں سے کی ہیں۔ایک تو یہ اردو زبان کی ادیبہ ہیں، بہترین ریڈیوپرزنٹر ہیں، بہترین مترجم ہیں ،انہوں نے اردو ادب کے تخلیق کاروں کو روس میں متعارف کرانے کا کام کیا ہے جس میں قرۃ العین حیدر ، کرشن چندر، عصمت چغتائی جیسے قد آورافسانہ نگار قابل ذکر ہیں۔پروفیسر ابنِ کنول ، دہلی یونیورسٹی، دہلی نے اپنے خطاب میں کہا کہ محترمہ ایرینا میکسی مینکونے روس میں قابل قدر کیا ہے ، قدیم وجدید تخلیق کاروںکی ایک طویل فہرست ہے جنہیں ایرینا میکسی نے روس میں تراجم کے ذریعے متعارف کرایا ہے۔خود کئی ریڈیوچینلز سے منسلک ہونے کی وجہ سے روس میں ہندوستانی زبانوں پر بہتر اور بھرپور کام کیا ہے۔دیگر ہندوستانی زبانوں کی بہ نسبت اردو زبان سے ایرینا کا لگاؤ گہرا ہے۔ ایرینا وائس آف رشیا میں بحیثیت انکر، نامہ نگار اردو،ہندی، بنگالی، تمل، پنجابی وغیرہ سمیت ہندوستانی زبانوں کے ماہرین سے ملاقاتی ڈائری نشر کرنے کا خاص اہتمام کیا جس میںاردو کے قلم کاروں سے روسی بڑی تعداد میں متعارف ہوئے ہیں۔
آج کے پروگرام میں مہمان خصوصی محترمہ ایرینا میکسی مینکونے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ روس میںاردو کی صورت حال بہترہے مگربہت بہتر نہیں ہے۔ اس کی سب سے بنیادی وجہ یہ ہے کہ اردو جاننے والے اب روس میں بھی انگریزی میں بات کررہے ہیں جو اردو زبان کے لیے نیک فال نہیں ہے۔ مجھے اردو زبان وادب سے محبت اردو سے تہذیبی لگاؤ ہے۔موصوفہ نے اپنی پیشہ وارانہ زندگی کا تجربہ بھی پیش کیا جس میںمختلف ریڈیوزچینلزسے اپنی وابستگی اور ان سے منسلک تجربات کا اظہار کیا خاص طور پر کیا۔روس میں میری کوششوں سے اردو اور ہندی میں ریڈیو گرامرکا اچھا خاصا مواد تیار ہے۔ایرینا میکسی نے یہ بھی کہا کہ میکسیکو اور ورلڈ اردو ایسوسی ایشن کے اشتراک سے نئی نسل کے لیے جلد ہی ایک کورس کا انتظام کیا جائے گا جس میں روس اور ہندوستان کے طلبہ وطالبات آپس میں ایکسچینج پروگرام میں شرکت کر سکیں گے۔ساتھ ہی اردو زبان کے لیے ریڈیواور اس جیسے میڈیم قیام جلد میکسیکو میں عمل میں آئے گا۔اخیر میں ہندوستانی زبانوں کا مرکز کے چیئرپرسن پروفیسر اوم پرکاش سنگھ نے صدارتی خطبہ پیش کرتے ہوئے ایرینا میکسی کا استقبال کیا اور کہا کہ ہندوستان اور روس کا ادبی رشتہ صدیوں پر محیط ہے ۔ مہمان کے ساتھ ہم سب مل کر جلد ہی ایک کارآمد کورس پر کا م کرنے کی کوشش کریں گے۔اس نشست میں ڈاکٹر محمد توحید خان، ڈاکٹر شیو پرکاش کے ساتھ بڑی تعداد میں ریسرچ اسکالرس موجود تھے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here