ریپ ہونا ضروری ہے ۔۔۔ کبھی چھوٹی ، کبھی بڑی ہرطرح کی عورت کے ساتھ ریپ ہونا ضروری

0
38
ریپ ہونا ضروری ہے ۔۔۔ کبھی چھوٹی ، کبھی بڑی ، کبھی انگریز، کبھی ہندستانی ، کبھی کوئی ، کبھی کوئی
ریپ ہونا ضروری ہے ۔۔۔ کبھی چھوٹی ، کبھی بڑی ، کبھی انگریز، کبھی ہندستانی ، کبھی کوئی ، کبھی کوئی

ریپ ہونا ضروری ہے ۔۔۔ کبھی چھوٹی ، کبھی بڑی ، کبھی انگریز، کبھی ہندستانی ، کبھی کوئی ، کبھی کوئی ۔۔۔ ہرطرح کی عورت کے ساتھ ریپ ہونا ضروری نہیں بلکہ انتہائی ضروری ہے۔
’’اس سالے کی ماں بہن کے ساتھ بھی ریپ ہونا ضروری ہے‘‘۔۔۔ اب تک یہ جملہ آپ نے خود ایڈ کر لیا ہوگا ۔۔۔ اگر نہیں تو اتنا ضرور کہا ہوگا ’’ سالا پاگل ہوگیا ہے ۔۔۔ گولی مار دینی چاہئے ایسے لوگوں کو‘‘۔
مطلب کیا ہوا ۔۔۔؟ ہمارے سماج میں ہر شخص کریمنل ہے ۔۔۔ کوئی سوچ کر رہ جاتا ہے اور کوئی کر بیٹھتا ہے۔
’’اس سالے کی ماں بہن کے ساتھ بھی ریپ ہونا ضروری ہے‘‘۔۔ اگر آپ نے یہ سوچا تھا تو ریپ ہونے پر آپ کو اعتراض کیوں ہے ۔۔۔؟
’’ سالا پاگل ہوگیا ہے ۔۔ گولی مار دینی چاہئے ایسے لوگوں کو‘‘۔۔۔ اگر آپ نے یہ سوچا تھا تو لنچنگ پر چلاتے کیوں ہیں ۔۔۔؟
ہم نے مانا کہ بہت غلط بات ہے مگر آپ کو یہی کیوں سوجھا کچھ اور کیوں نہیں ۔۔۔؟  پتا ہے سماج میں کرائم اس لئے ہے کیوں کہ ہمارا ذہن کریمنل ہے ۔۔۔ سماج میں کوئی کسی کو اس لیے جلا کے مار دیتا ہے کیونکہ ہم پولیس انکاؤنٹر پر خوش ہوتے ہیں۔
کٹھوعہ میں جب آپ نے ریپ کے ملزموں کیلئے ترنگا یاترا نکالا تو پھر آپ کو اناؤ اور تلنگانہ کے ریپ کیوں برے لگ رہے ہیں۔۔۔؟
رہی بات اناؤ کی تو سینگر کو اسمبلی میں کس نے بھیجا۔۔۔؟  اب اگر وہ ریپ کرتا ہے تو برا کیا ہے ۔۔۔؟ کیا اس کا پہلے سے کریمنل ریکارڈ نہیں تھا ۔۔۔ تو پھر کیوں چنا ۔۔۔؟ بلی کو دودھ کی رکھوالی پر رکھ کردودھ کے تحفظ کی توقع صرف فضول ہی نہیں بے وقوفی بھی ہے ۔
2019 کے بعد4.7 فیصد ایم پی ہی ایسے ہیں جو صاف شبیہ والے ہیں ورنہ آپ نے تو 50 فیصد اپم پی ایسے چنے ہیں جن پر مجرمانہ کیسیز ہیں ۔۔۔ آپ کو جان کر یقینا خوشی ہوگی کہ ان میں سے 44 فیصد ایسے ہیں جو کورٹ کی جانب سے ڈکلیئرڈ مجرم ہیں ۔۔۔ اور ان میں بھی 30 فیصد ایسے ہیں جو ریپسٹ اور کڈ نیپروغیرہ ہیں۔
کٹھوعہ اور نربھیا تو بہت پہلے ہوچکا تھا ۔۔۔ آپ یہ نہیں کہہ سکتے کہ پتا ہی نہیں تھا ۔۔۔ بھر بھی آپ نے اتنی بڑی تعداد میں ریپسٹوں کو پارلیمنٹ بھیجا ۔۔۔ پھر ریپ کیوں برا لگ رہا ہے ۔۔۔؟
نربھیا ، آصفہ اور ریڈی تینوں کے مجرم چرسی اور نشہ خور تھے ۔۔۔  کتنے لوگ ایسے ہیں جو اپنی اولاد پر اتنی پینی نظر رکھتے ہیں کہ نشہ کی لت میں نہ پڑے ۔۔۔ جب نہیں کرتے تو ریپ کیوں برا لگتا ہے۔
ہماری ساسو مائیں اکثر اپنے بیٹوں سے اپنی بہوؤں کی پٹواتی ہیں ۔۔۔ کئی بار جہیز کےلئے گھر بھر مل کر جلا بھی دیتے ہیں ۔۔۔ یہی سب دیکھنے اور سیکھنے والا اگر کسی کو ریپ کرکے جلا دیتا ہے تو برا کیوں لگتا ہے۔۔۔؟
آپ  سوچئے جب آپ کو مجرم لیڈر پسند ہیں ۔۔۔نشہ خور ،بیویوں کو پیٹنے اور جلانے والا بیٹا پسند ہے ۔۔۔ ریپسٹ ، قاتل اور کڈنپر کو ایم پی بناتے ہیں ۔۔۔ 50 فیصد مجرموں کو لیڈر مانتے ہیں ۔۔۔ انھیں پسند کرتے ہیں ۔۔۔  پھر آپ سوچتے ہیں ہمارا سماج اچھا ہو ۔۔۔ کیا بھائی صاحب ۔۔۔ کہیں ہوا خارج کرنے سے عطر مجموعہ کی خوشبو تھوڑی آتی  ہے ۔

سیف ازہر
فیکلٹی آف ایجوکیشن
جامعہ ملیہ اسلامیہ ، نئی دہلی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here