پٹرول ڈیزل کی بڑھتی قیمتوں پر آخر کار ہائی کورٹ جاگی اور حکومت کو بھیجا نوٹس

0
31

ملک میں پٹرول ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کو لیکر ہا ہا کار مچی ہوئی ہے ۔حکومت خاموش ہے لیکن اس ضمن میں ہائی کورٹ نے پہلا قدم بڑھایا ہے اور ایک مفاد عامہ کی عرضی پرسماعت کرتے ہوئے مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کیا ہے۔ کورٹ نے مرکز سے قیمتوں میں اضافہ ہونے سے متعلق جواب طلب کیا ہے اورمعاملے کی آئندہ سماعت 16 نومبرکومقررکی ہے۔عدالت نےعرضی گزارسے بھی کہا ہے کہ 4 ہفتے کے اندروہ مرکزی حکومت کو پرزنٹیشن دیں اوربتائیں کہ کیسے پٹرول – ڈیژل کی قیمتوں میں کمی آسکتی ہے۔ حالانکہ ہائی کورٹ نے یہ بھی کہا کہ پٹرول – ڈیژل کی قیمت حکومت کی پالیسی کا حصہ ہیں۔ کیسے اس پرعدالت حکم دے سکتی ہے، لہٰذا 16 نومبرتک عرضی گزاراورمرکزی حکومت اس بابت جواب دائر کریں۔اس عرضی میں اسینشیل کموڈٹیزایکٹ 1955 کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یہ مرکزی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ ضروری اشیا کو مناسب قیمتوں پرعام لوگوں تک پہنچائیں۔ گزشتہ دنوں مسلسل پٹرول – ڈیژل کی قیمتوں کے متعلق عدالت سے یہ مانگ کی گئی ہے کہ وہ مرکزکو فوری حکم دیں، جس سے عام لوگوں کو کچھ راحت ملے ۔کیونکہ پٹرول ڈیزل مہنگا تو سب مہنگا

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here