کثرت پہ نہ جائو کس طرف ہے۔انصاف بتائو کس طرف ہے ۔مظفر حنفی

0
85
کثرت پہ نہ جائو کس طرف ہے۔انصاف بتائو کس طرف ہے
کثرت پہ نہ جائو کس طرف ہے۔انصاف بتائو کس طرف ہے

مظفر حنفی کا نام کسی تعارف کا محتاج نہیں ہے ۔ایک بے حد سینئر اور شہرت یافتہ شاعر جن کو اللہ نے بہت نوازا ہے مظفر حنفی  تیس سے زائد کتابوں کے مصنف ہیں ۔ چند نام یہ ہیں: ’پانی کی زبان‘، ’تیکھی غزلیں‘، ’عکس ریز‘، ’صریرخامہ‘، ’دیپک راگ‘، یم بہ یم‘، ’کھل جا سم سم‘(شاعری)، ’دوغنڈے‘، ’دیدۂ حیراں‘(افسانے) ، ’نقد ریزے‘، ’جہات وجستجو‘، ’باتیں ادب کی‘، ’لاگ لپیٹ کے بغیر‘، ’وضاحتی کتابیات‘، ’غزلیات میرحسن‘، (تحقیق وتنقید)، ’’روح غزل‘(انتخاب)، ’شاد عارفی۔ ایک مطالعہ‘، ۔ ان کی مجموعی خدمات کے اعتراف میں مغربی بنگال اردو اکادمی نے ان کو کل ہند’’پرویز شاہدی ایوارڈ‘‘ ،غالب انسٹی ٹیوٹ (دہلی) نے کل ہند فحرالدین علی احمد’’غالب ایوارڈ‘‘ برائے تحقیق وتنقید پیش کیا ہے۔ اس کے علاوہ انھیں مختلف ریاستی اردو اکادمیوں سے اٹھارہ انعامات ملے۔کل ہند میراکادمی لکھنؤ کا ’’میرایوارڈ‘‘ بھی ملا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

آج تک آزما رہی ہے مجھے

کربلا پھر بلا رہی ہے مجھے

خون للکارتا ہے بڑھ بڑھ کر

صاف آواز آ رہی ہے مجھے

خنجر شمر تو وسیلہ ہے

خود شناسی مٹا رہی ہے مجھے

ذرہ ذرہ مرے لیے کوفہ

زندگی ورغلا رہی ہے مجھے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

یہ سچ ہے کوئی رہنما ٹھیک نئیں

مرے بھائی تو بھی چلا ٹھیک نئیں

ادیبوں کو سچ بولنا چاہیے

سیاست کی آب و ہوا ٹھیک نئیں

نگاہوں سے میلا نہ ہو جائے وہ

اسے دیر تک دیکھنا ٹھیک نئیں

ہمیں تو وہی سمت مرغوب ہے

بلا سے ادھر راستہ ٹھیک نئیں

چلو دھوپ سے آشنائی کریں

یہ دیوار کا آسرا ٹھیک نئیں

نمی آنکھ میں ہاتھ میں تھرتھری

ترے مانگنے کی ادا ٹھیک نئیں

زمانہ مخالف تھا قسمت خراب

مظفرؔ یہاں کچھ بھی تھا ٹھیک نئیں

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here