ارنب گوسوامی اور بی جے پی کا رشتہ کیا ہے۔ کیاارنب ہی کورٹ ہے

0
34
ارنب گوسوامی اور بی جے پی کا رشتہ کیا ہے۔ کیاارنب ہی کورٹ ہے
ارنب گوسوامی اور بی جے پی کا رشتہ کیا ہے۔ کیاارنب ہی کورٹ ہے
ارنب کی گرفتاری نے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا ،خاص طوور پر بی جے پی خیمے میں تو ہلچل ہی مچ گئی ۔ٓخر ارنب گوسوامی اتنا اہم کیسے ہوگیا کہ اس کے لیے سارے ٓآر ایس ایس کے لوگ سارا میڈیا ایک ہوگیاآخر ارنب اور بی جے پی کا رشتہ کیا کہلاتا ہے ؟
نام تو سنا ہوگا پنسارے ، دابھولکر ، کلبرگی، گوری لنکیش ، دیوجی مہیشوری،  یہ وہ نام ہے جسے لکھنے بولنے کی وجہ سے موت کے گھاٹ اتار دیا گیا تھا، اسی فہرست میں دیگر اور بھی نام ہے، یہ وہی ملک ہے جہاں لوگوں نے اپنے حساب سے اظہار  رائے کی آزادی کا مطلب نکال لیا ہے، مطلب نکالنے والوں میں 90% اُن پارٹی اور سوچ کے لوگ ہیں جو اُن تمام آزادی لکھنے بولنے والوں کا قتل پر اپنے دفتر میں بیٹھ کر چائے کی چسکی لے رہیں تھے، اظہار رائے کی آزادی خطرے میں نہیں تھی، اسی ملک میں میرے ریکارڈ میں موجود 113 لوگوں کی مآب لنچنگ ہوئی، مذہب سے جوڑ کر نہ جانے کتنی کہانیوں کو جوڑا گیا، 2014، کے بعد ملک میں مختلف برادری کے بیچ مختلف حساس مدوں کو ہوا دیکر نفرت کا بازار تیار کیا گیا، اور اس بازار کو تیار کرنے میں اہم رول ادا کیا گودی میڈیا نے ، جس میں ایک اہم نام ہے ارنب گوسوامی کا ، حالانکہ حمام میں سب ننگے ہیں، لیکن ارنب گوسوامی نے صحافت کے نام پر زبردست چاپلوسی کر فہرست میں پہلا نام درج کرنے میں کامیاب ہو گئے، در اصل ارنب گوسوامی کے لئے فکر سے کئی زیادہ معنیٰ حکمران پارٹی کی چاپلوسی ہے، جس کی کئی مثال اُن کے اپنے ہی ٹی وی شوز ہیں، یوپی اے کال میں اپوزیشن لیڈروں کے ساتھ ٹی وی شو کے انٹرویوز  اور ڈیبیٹ ہیں، جہاں حکمراں پارٹی سے سوال کرنے کے بجائے اپوزیشن سے نوک جھوک کرتے دکھے ہیں، حال میں وہ وہی کر رہے ہیں جو پہلے کیا تھا، اب پہلے سے چار قدم آگے بڑھ کر کر رہے ہیں، ارنب کے والد بی جے پی لیڈر کی شکل میں کھل کر سب کے سامنے تھے، بیٹا نے وہی پارٹی کا جھنڈا اٹھایا لیکن صحافت کی آڑ میں چاپلوسی کر، آج کی تاریخ میں اس بات کو کوئی جھٹلا نہیں سکتا ، اگر نہیں تو صرف اس پارٹی کے چھوٹے سے لیکر بڑے بڑے لیڈر ارنب کی حمایت میں بیان پر بیان کیوں دے رہیں؟ آخر یہ رشتہ کیا کہلاتا ہے،
ارنب کی گرفتاری ہوئی تو اظہار رائے کی آزادی پر حملہ, جمہوریت کا چوتھا ستون خطرے میں، اور جو پچھلے پانچ سال سے اس جمہوریت کے سبھی چاروں ستونوں کی اہمیت کو غیر اہم بنانے کا جو ننگا ناچ کھیلا جا رہا تھا وہ کیا تھا؟ یہ اچانک چائے میں طوفانی کیوں؟ سرکار کے خلاف لکھنے بولنے والوں کو ایک ایک کر جیل میں ڈالا جا رہا ہے، کیا آزادی لکھنے، بولنے والوں کی اظہار رائے کی آزادی نہیں ہے، ارنب کی گرفتاری اظہار رائے کی آزادی پر حملہ ہے تو اُن تمام آزاد ، مصنف , صحافی، شاعر و سماجی کارکن جو جیل میں بند ہیں اُن کے لئے پھر کیا ہے؟ جیل میں بند اُن تمام لکھنے والوں کے نام پر آپ کی چائے میں طوفانی کیوں نہیں؟ جس انسان نے اپنے فائدے کے لئے کسی اہم شخص کو خودکشی کرنے پر مجبور کر دیا وہ انسان نہیں انسان کے نام پر داغ ہے، مان لیا کہ ابھی کی تازہ مثال جس میں ارنب  کی گرفتاری ہوئی ہے، کورٹ میں مجرم ثابت نہیں ہوا ہے،  کورٹ میں سنوائی ہونی ہے،وقتی طور پر ارنب گوسوامی کو 14, دن کی عدالتی تحویل میں بھیجا گیا ہے، لیکن پچھلے کئی سالوں سے مختلف اہم شخصیات کی پرسنل زندگی کو جہنم بنانے کا جو گھٹیا کھیل رہے تھے وہ کیا ہے ؟ کیا یہ جرم نہیں ہے ؟ کیا ایک صحافی کا معیار و مرتبہ یہی ہے کہ وہ مجرم، گنڈے موالی کی طرح چینل پر بیٹھ کر نیچ حرکت اور نا شائستہ زبان کا استعمال کریں، بغیر ثبوت و گواہ کے کسی بھی اہم شخص کو چیخ چیخ کر گناہ گار ثابت کرنے کا حق کس نے دیا، کیا ارنب ہی کورٹ ہے ؟ وہ جو کھیگا وہی مان لیا جائے گا ؟ سنجیدہ ملکی باشندے اسے کیسے مان سکتے ہیں
عفان نعمانی
Articlw by Affan Nomani on Arnab Goswami
Sada Today Web portal

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here