امریکہ اور چین ایک بار پھر آمنے سامنے

0
102

بیجنگ؍نئی (ایجنسی) تجارت میں بڑھتے تنائو کے بیچ چین نے بھی امریکہ کے تئیں اپنے تیور سخت کرلیے ہیں۔ چین نے امریکی سفیر تیری برانسٹینڈ اور بحریہ کے سربراہ کو طلب کیا ہے۔ امریکہ نے چین کی کئی کمپنیوں پر روس سے ہتھیار خریدنے پر پابندی لگارکھی ہے، اس کی مخالفت میں انہیں طلب کیا ہے۔
سائوتھ چین مارننگ کی اطلاع کے مطابق بیجنگ میں ہونے والی تین روزہ دوطرفہ بات چیت بھی رد کردی گئی ہے۔ امریکہ چین پر عائد پابندیوں کو واپس نہیں لیتا ہے تو چین نے آگے بھی سخت کارروائی کی دھمکی دی ہے۔ چین کی حکومت نے امریکہ کو اپنی غلطی صحیح کرتے ہوئے اس میں سدھار لانے کے ساتھ ہی پابندی ہٹانے کے لیے کہا ہے۔
تفصیلات کے مطابق امریکہ اور چین کے مابین چل رہی تجارتی جنگ دن بدن بڑھتی جارہی ہے ، دونوں ملک پیر سے ایک دوسرے کے سامانوں پر نئی درآمد ڈیوٹی لگانے کی تیاری کررہے ہیں۔دنیا کی دو سب سے بڑی معیشتوں کے مابین جاری تجارتی جنگ کایہ تازہ معاملہ ہے۔امریکہ 200 ارب ڈالر کے چینی سامان پر فاضل درآمد ڈیوٹی لگانے کی تیاری کررہا ہے جبکہ اس کے جوا ب میں چین کا منصوبہ 60ارب ڈالر کے امریکی سامانوں پر فاضل امپورٹ ڈیوٹی لگانے کا ہے۔اس سے پہلے اسی برس دونوں ملکوں نے ایک دوسرے کے پچاس ارب ڈالر کے سامانوں پر فاضل درآمد ڈیوٹی لگائی تھی جس کے بعد سے دونوں کے مابین تجارتی جنگ چل رہی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here