لالویادو کے لیے بری خبر، ضمامت کی مدت بڑھانے سے ہائی کورٹ کا انکار

0
145

سپریم کورٹ کے وکیل ابھیشیک منو سنگھوی نے لالو یادو کی جانب سے موقف رکھا اور طبی بنیاد پر چار مہینے ضمانت کی مدت کو بڑھانے کی درخواست کی جسے کورٹ نے ٹھکرا دیا۔اس وقت بہار کا جو سیاسی ماحول ہے وہ انتہائی ناگفتہ بہ ہے۔ ہر طرف خوف کا ماحول ہے۔ لوگوں میں دہشت پھیلی ہوئی ہے۔ اسکے علاوہ آپ کو بتادیں کہ یہ حال صرف بہار کا ہی نہیں ، بلکہ پورے ہندوستان کا ہے۔ ہر طرف خوف و دہشت کا ماحول ہے۔ خیر، اس کا یہاں بیان کرنا شاید مناسب نہیں ہوگا۔ ان تمام حالات کے پیش نظر بہار کے لیے ان کازندہ رہنا اور پھر سیاست میں بنے رہنا ضروری ہے۔ شاید اسی لیے ان کی ضمانت کو خارج کردینا بہار کے حالات کے پیش نظر بری خبر ہے۔
آپ کو بتادیاں کہ بہار کے مشہور و معروف سیاستداں اور آر جے ڈی کے سپریمو لالو پرساد یادو کے ایک بری خبر سامنے آرہی ہے۔ ہائی کورٹ سے ایک بڑا جھٹکا لگتا ہوا محسوس ہورہا ہے۔ یعنی ہائی کورٹ نے ان کی ضمانت کی عرضی خارج کردی ہے۔ بہار کے سابق وزیر اعلی اور آر جے ڈی سربراہ لالو پرساد یادو کوہائی کورٹ سے بڑا جھٹکا لگا ہے۔ ہائی کورٹ نے ان کی ضمانت عرضی کو خارج کر دیا۔ ساتھ ہی 30اگست کو سرینڈر کرنے کا حکم دیا ہے۔ جسٹس اپریش کمار سنگھ کی کورٹ میں عرضی پر سماعت ہوئی۔اس دوران سپریم کورٹ کے وکیل ابھیشیک منو سنگھوی نے لالو یادو کی جانب سے موقف رکھا اور طبی بنیاد پر چار مہینے ضمانت کی مدت کو بڑھانے کی درخواست کی جسے کورٹ نے ٹھکرا دیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here