ساس بہو کی گھنائونی حرکت کا پردہ فاش

اپنے ہی گھر پر لڑکیوں کو بلاکر جنسی استحصال کا دھندا کرواتی تھیں

اس وقت پورے ملک کی حالت بہت ہی ناگفتہ بہ ہوتی جارہی ہے، انسانیت کے نام کی کوئی چیز نہیں دکھائی دے رہی ہے۔ ہر طرف لڑکیاں خود کوغیر محفوظ سمجھ رہی ہیں اور جنسی استحصال رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ کہیں جنسی استحصال کا دھندا چل رہا ہے ہوتا ہے تو کہیں جنسی استحصال کے نام پر لوگوں کو ٹھگا جارہا ہے۔ یعنی انسان حیوانیت پر اتر آیا ہے۔ آئے دن اخبارات میں نابالغ بچیوں کی عصمت دری کی بھی خبریں آتی رہتی ہیں۔ اس کے علاوہ جوان لڑکیوں کے ساتھ بھی سرراہ بے عزتی کی خبر شائع ہوتی رہتی ہے۔ اسی طرح کا ایک اور واقعہ گزشتہ روز ہماچل پردیش میں پیش آیا ہے۔ آپ کو بتادیں کہ ہماچل پردیش میں چنبا پولیس نے سلطانپورہ میں ایک سیکس ریکٹ کا پردہ فاش کیا ہے۔ پولیس نے ایک گھر میں ساس اور اس کی بہو کے ساتھ تین لڑکیوں کو جسم فروشی کے دھندا میں گرفتار کیا ہے۔ ساس اور بہو باہر سے لڑکیاں بلا کر ان سے اپنے ہی گھر میں جسم فروشی کا دھندا کرواتی تھیں۔ پولیس کو پہلے سے ہی اس سیکس ریکٹ کے بارے میں اطلاع تھی لیکن کسی بھی طرح کا کوئی ٹھوس ثبوت ان کے خلاف نہیں مل پا رہا تھا۔ پولیس کی ٹیم نے بڑے ہی فلمی انداز میں جال بچھایا اور اس سیکس ریکٹ کا پردہ فاش کیا۔ پولیس نے موقع سے شراب کی بوتلیں بھی برآمد کی ہیں۔ایڈیشنل پولیس سپرنٹنڈنٹ رمن شرما نے بتایا کہ پولیس کو یہ اطلاع ملی تھی کہ سلطانپورہ میں جسم فروشی کا کاروبار کیا جا رہا ہے۔ اس معلومات پر پولیس نے بہت ہی خفیہ طریقہ سے جال بچھایا اور اپنے ہی ایک شخص کو ان خواتین کے پاس گاہک بنا کر بھیجا۔ بعد میں پولیس نے دبش دے کر اسی گھر سے ساس۔ بہو اور ان کے ساتھ تین لڑکیوں کو گرفتار کر لیا۔ ہفتہ کو انہیں عدالت میں پیش کر ریمانڈ پر لیا جائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے