اتراکھنڈ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس جوزف کی پرموشن پر حکومت کی مہر

0
19

چیف جسٹس کے ایم جوزف کو سپریم کورٹ کے جج کے طور پر ترقی دینے کے سلسلے میں كولیجيم کی جانب سے دوبارہ بھیجی گئی سفارش مان لی ہے

نئی دہلی:مرکزی حکومت نے اتراکھنڈ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کے ایم جوزف کو سپریم کورٹ کے جج کے طور پر ترقی دینے کے سلسلے میں كولیجيم کی جانب سے دوبارہ بھیجی گئی سفارش مان لی ہے۔حکومت نے جسٹس جوزف کے علاوہ مدراس ہائی کورٹ کی چیف جسٹس اندرا بنرجی اور اڑیسہ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس ونیت سرن کو بھی عدالت عظمی میں بھیجنے کی سفارش کو منظوری دے دی ہے۔چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی والے پانچ رکنی كولیجيم نے جسٹس جوزف کا نام ایک بار حکومت کی طرف سے واپس کئے جانے کے بعد دوبارہ حکومت کے پاس بھیجا تھا۔ اس کے بعد حکومت کے پاس نام پر رضامندی دینے کے بجائے کوئی دوسرا راستہ نہیں تھا۔جسٹس جوزف کی ترقی کو لے کر گزشتہ چند ماہ سے ایگزیکٹو اور عدلیہ کے درمیان رسہ کشی دیکھنے کو مل رہی تھی، لیکن ان کے نام پر مہر لگنے کے ساتھ ہی اس معاملے پر تصادم ختم ہو چکا ہے۔غور طلب ہے کہ تقریبا ایک پكھواڑا پہلے سپریم کورٹ كولیجيم نے حکومت کے اعتراضات کو نظر انداز کرتے ہوئے جسٹس جوزف کو سپریم کورٹ کا جج بنائے جانے کی دوبارہ سفارش کی تھی، ساتھ ہی اس نے جسٹس بنرجی اور جسٹس سرن کو بھی جج بنانے کی سفارش حکومت کو بھیجی تھی ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here