بنگلہ دیش اور سری لنکا میں بھی یونانی طبّی کانگریس کی شاخوں کا قیام

نئی دہلی:آل انڈیایونانی طبّی کانگریس کی قومی مجلس عاملہ کی سفارشات کی بنیاد پر بنگلہ دیش اور سری لنکا میں بھی یونانی طبّی کانگریس کی شاخوں کے قیام کے لیے عملی شکل دی جارہی ہے۔ آل انڈیایونانی طبّی کانگریس کے سکریٹری جنرل ڈاکٹر سیّد احمد خاں نے جاری بیان میں بتایا کہ بنگلہ دیش میں ڈاکٹر روح الامین (ڈھاکہ) اور سری لنکا میں ڈاکٹر محمد شفاء (انگوڈا) کو یونانی طبّی کانگریس کی ممبرشپ سے سرفراز کیا گیا اور ان حضرات سے حسب ترتیب ’آل بنگلہ دیش یونانی طبّی کانگریس‘ اور ’آل سری لنکا یونانی طبّی کانگریس‘ کی شاخیں اپنے اپنے ملک میں باضابطہ قائم کرنے کا مشورہ دیا گیا اور ان کی مزید رہنمائی کے لیے آل انڈیایونانی طبّی کانگریس، نئی دہلی کی جانب سے ڈاکٹر ایس ایم حسین کو انٹرنیشنل کنوینر، ڈاکٹر غزالہ جاوید اور ڈاکٹر مجیب الرحمن کو انٹرنیشنل کو-کنوینر نامزد کیا گیا۔ پروفیسر مشتاق احمد (قومی صدر تنظیم ہذا و سابق صدر شعبہ یونانی، کیپ ٹائون یونیورسٹی، سائوتھ افریقہ) نے طبّی کانگریس کی شاخوں کے قیام پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عنقریب یوروپ اور امریکہ میں بھی طبّی کانگریس کی شاخیں قائم کی جائیں گی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم عملی طور پر یہ ثابت کرنا چاہتے ہیں کہ طب یونانی ہندوستانی طریقہ علاج کا نہ صرف ایک اہم حصہ ہے بلکہ طب یونانی اب پوری دنیا میں ہندوستان کی لیڈرشپ سے جانی جائے گی۔ آل انڈیایونانی طبّی کانگریس (جموں اینڈ کشمیر) کے صدر ڈاکٹر محمد یوسف پیرزادہ نے بھی طبّی کانگریس کی کامیاب پیش رفت پر خوشی کا اظہار کیا اور اُمید ظاہر کی کہ مستقبل میں طبّی کانگریس کے کارنامے سنہرے حروف میں لکھے جائیں گے۔یہ اطلاع محمد عمران قنوجی ،پریس سکریٹری، آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس، نئی دہلینے دی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram