طلاقِ ثلاثہ بِل ( سانیٹ )

بِل طلاقِ ثلاثہ ہے کیا ، کُچھ نہیں
طَے شُدہ ایک منصوبہ ہے ، چال ہے
شاطِروں کا بِچھایا ہُوا جال ہے
اِک منعظّم سازِش کے سِوا کچھ نہیں
غاصبِ مذہبی آزادی ہیں یہی
زعمِ تعداد اور نشّۂ اِقتدار
ذہن و دِل کے کالوں پہ ہُوا ہے سوار
کام اِن کا نہیں جو ہیں کرتے وہی
جو مسائِل ہمارے ہیں اُن کا ہے حل
اپنے رَب کی رضا پہ رضا مند ہیں
حُکمِ قرآن و سُنّتؐ کے پابند ہیں
غیر مُمکن شریعت میں ردّ و بدل
آختُھو تُھو یہ بِل یہ دلیل اے نیاز
حَسْبُناَ الّٰلدُ و نعِمَ الْوَکِیْل اے نیاز
٭٭٭
نیاز جَیراجپُوری
Neyaz Jairajpuri M.A.,LL.M.(Alig)
Editor SHANDAR Monthly
67, Jalandhari
AZAMGARH – 276001 ( U.P.) INDIA
Mobile: +91 9935751213 / 9616747576
Email: njairajpuri@gmail.com

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram