ٹی ایم سی کے سکریٹری جنرل وریاستی وزیر تعلیم پارتھوچٹرجی کا بی جے پی پر الزام

کہا، بی جے پی بنگال میں امن وامان کی فضاء کو خراب کرنے کی کوشش کررہی ہے

کلکتہ:مغربی بنگال میں بی جے پی کی ریلی کو لے کر کافی ہنگامہ ہوا۔ اس کو لے کر ممتا بنرجی اور بی جے پی کے صدر امت شاہ سے لفظی جملے بازی بھی ہوئی۔ بالاخر بی جے پی مشروط ریلی نکالنے کی اجازت مل ہی گئی۔ اب ٹی ایم سی (ترنمول کانگریس ) نے بی جے پی کو عوام دشمن قرار دیتے ہوئے ترنمول کانگریس کے سیکریٹری جنرل و ریاستی وزیر تعلیم پارتھو چٹرجی نے کہا ہے کہ بنگال بی جے پی عوام کے مسائل و مشکلات سے متعلق بات چیت کرنے کے بجائے صرف اور صرف سرخیوں میں رہنے کیلئے ”تنازعات“ کھڑا کررہی ہے اور بنگال میں امن وامان کی فضاء کو خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔پارتھیو چٹرجی نے کہا کہ بی جے پی عوامی ایشوز پر بات نہیں کرتی ہے، صرف ایئر کنڈیشن روم میں بیٹھ کر تنازعات کھڑا کرتے ہیں تاکہ میڈیا میں چھائے رہیں اور میڈیا بھی انہی ایشوز پر بات کرتی ہے۔بی جے پی کو بنگال کے عوام اور ان کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں ہے۔یہ لوگ مرکزی حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف بات کرنا نہیں چاہتے ہیں۔صرف منفی باتیں کرتے ہیں اور اخباروں کی سرخی بننا چاہتے ہیں۔بنگال میں رتھ یاترا کی اجازت کیلئے سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کے بی جے پی کے اعلان پر تبصرہ کرتے ہوئے چٹرجی نے کہا کہ بی جے پی کچھ بھی کرلے وہ بنگال کے عوام کا دل نہیں جیت سکتی۔یہ سوال ہی نہیں وہ کیا کررہے ہیں اور کیا نہیں۔اس سے قبل بی جے پی کے ریاستی صدر دلیپ گھوش نے کہا تھا کہ ممتا بنرجی کسی بھی صورت میں بی جے پی کی راہ کو روکنے کیلئے کوشش کررہی ہیں۔مگر ہم لا اینڈ آرڈ کی پرواہ کیے بغیر پارٹی کی راہ روکے جانے کے خلاف احتجاج کریں گے۔پولس کی مدد کی لی جارہی ہے۔گھوش نے کہا تھا کہ اگر ممتا بنرجی سمجھتی ہیں کہ وہ اس مہم میں کامیاب ہوجائیں گی تو یہ ان کی خام خیالی ہے۔اگر یہ لوگ ہمیں روکنے کی کوشش کی تو ریاست میں لا اینڈآرڈر کی صورت حال مزید خراب ہوجائیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *