دی 29پروفیٹس

 

مصنف: پروفیسر جمال نصرت
7355962950
صفحات: 196
ناشر: مصنف
قیمت: 200
مبصر: غلام علی اخضر
پروفیسر جمال نصرت کی 196صفحات پر مشتمل انگریزی میں یہ کتاب ایک سنگ میل کی طرح سامنے آئی ہے۔ اس میں 29؍ انبیاے کرام کے حالات و کمالات شامل ہیں اور ان میں سے ہر ایک کا ذکر الگ الگ باب میںکیاگیاہے۔اس میں ان انبیاے کرام کو اللہ رب العزت نے قوم و ملت اور سماج و معاشرہ کی تعلیم و تلقین، ہدایت وتربیت،اصلاح و درستگی اور فلاح و بہبود کے لیے جواحکامات بتائے ہیں ؛کو پیش کیا گیاہے، ساتھ ہی دوسرے مذاہب میں ان ہی انبیا کے دیگر نام ،اہم مقامات کے نام و دیگرنام،حضرت آدم علیہ السلام تاحضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم گزرے ہوئے اشخاص اور خلفائے راشدین کے شجرے اورکچھ اہم الفاظ کی صفات وخصوصیات کو بیان کرکے کتاب کی اہمیت و افادیت میں اضافہ کردیاگیا ہے۔
کتاب میں خاص طور پر خاتم انبیا علیہ السلام کے سلسلے میں تفصیلات کو صرف ان کے خاندانی حالات صلح حدیبیہ کے نکات،فتح مکہ کے اعلانات اور آخری خطبہ جوحجۃ الوادع کے موقعے پر دیا ہے ؛کو بیان کرتے ہوئے مصنف نے بتایا ہے کہ وہ اپنے آپ کو اس کا اہل نہیں پاتا کہ ان عظیم الشان کارناموں، حکایتوں اور مشوروں پر قلم اٹھاسکے۔اسی میں مصنف نے پیغمبر اسلام کی 40؍ ہدایات جو ان کو اچھی لگیں؛کوبھی شامل کیا ہے۔ یہ بھی دل چسپی کے لائق ہے کہ پیغمبراسلام نے کو کن 12؍ غذائی اشیا سے خاص لگائوتھا۔
حضرت ابراہیم علیہ السلام اور حضرت موسی علیہ السلام کے باب خاصے تفصیل میں درج ہیں، جب کہ کچھ انبیائے کرام کے سلسلے میں کم جان کاریاں دی گئی ہیں کہ یہ تحریر ہے کہ جتنا کچھ حوالوں سے حاصل ہوسکا، پیش ہے۔
اس کتاب میں ان 26انبیائے کرام کے تذکرے شامل ہیں، جن کاذکر و حوالہ نام بنام قرآن حکیم میں باضابطہ طورپر آیا ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ 3؍ان انبیاے کرام کے تذکرے کوبھی شامل کیا گیا ہے جن کانام قرآن میں باضابطہ تو نہیں آیا ہے لیکن بے ضابطہ طور پر ضرور ان کاذکر اور احکام کے حوالے ملتے ہیں ۔ ان کے نام نامی حضرت یوشع،حضرت ہسکیل اورحضرت شمویل ہیں۔ اسی سبب سے کتاب کا نام ’’دی 29پروفیٹس‘‘ ہے۔
یوں تو مصنف نے تحریر کیا ہے کہ اس عالم میں 124000؍ہزار انبیائے کرام آئے ،جن میں سے صرف 313ہی رسول تھے۔ جنھیں رب العزب نے صحیفے یا اپنے خاص احکام کے ساتھ نوازا اور ذمے داری دی ۔ یہ انبیا عالم کے تمام خطوں میں جگہ جگہ پر الگ الگ وقتوں میں بھیجے گئے اور انھوں نے اس دنیا کو سنوار نے کا کام کیا۔ یہ بھی قابل ذکر ہے کہ آخری رسول تمام خطوں تمام قوموں اور پورے عالم کے لیے بھیج کر اس قادرمطلق نے واضح کردیا ہے کہ آگے کوئی نبی نہیں آئے گا ۔
کتاب کے سرورق پر مسجد اقصیٰ کی تصویر ہے جہاں پر تمام انبیا محمدعربی صلی اللہ علیہ وسلم کے معراج میں جانے کے وقت تشریف لائے تھے اور ان کی اقتدا میں نماز ادا کی تھی۔
کتاب کی خاص خصوصیت یہ ہے کہ زبان اور لب ولہجے کو آسان بنا کر پیش کیا گیا ہے، معتبر کتب،اہم تذکرے کی کتابوں کے حوالے، ساتھ ہی موقعے کے مطابق الفاظ کے معانی و مفاہیم کا اخذ کرنا اور احادیث کریمہ کی شمولیت نے اس کو مزید بہتر بنادیا ہے ۔ بیک ٹائٹل پیج پر مصنف کی تصویر کے ساتھ ان کا تعارف بھی شامل ہے۔صفحہ196پر’’ پروفیٹس‘کے ذیل میں تذکرے میں شامل انبیائے کرام کی خاص خصوصیات کو قلم بندکیاگیا ہے جن میں سے ہرایک خصوصیت دوسرے سے ممتاز ہے-امید ہے کہ قارئیں اس کتاب کو پسند کریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram