تیلگوریاستوں کے نوجوانوں کی فوج میں عدم دلچسپی

حیدرآباد:ملک کی حفاظت کے لیے اہم رول اداکرنے والی تینوں افواج (بری، بحری اور فضائیہ) میں بھرتی میں تیلگوریاستوں کے نوجوان پیچھے ہیں۔ نہ صرف شمالی ہند کی ریاستوں کے مقابلہ بلکہ جنوبی کرناٹک،تمل ناڈو اورکیرل کے مقابلہ بھی تلنگانہ اور اے پی اس معاملہ میں پیچھے ہیں۔ماہرین کا احساس ہے کہ مسلح افواج کے سلسلہ میں بیداری میں اضافہ کے لئے کوچنگ دینے والے اداروں کو آگے آنے کی ضرورت ہے۔آئی آئی ٹیز ،میڈیکل کی طرح انٹر میڈیٹ کے بعد نیشنل ڈیفنس اکیڈیمی (این ڈی اے )وغیرہ جیسے اداروں پر توجہ دے کر ان اداروں کے ذریعہ اعلی عہدوں تک رسائی حاصل کی جاسکتی ہے۔ان عہدوں پر جو سہولتیں حاصل ہیں،وہ آئی اے ایس عہدیداروں کو بھی حاصل ہیں۔تینوں مسلح افواج ،یو پی ایس سی ،اسٹاف سلکشن کمیشن کے علاوہ اپنے طورپر بھی بھرتی کرتے ہیں۔فوج میں مختلف ریاستوں سے منتخب افراد کی تعداد اس طرح ہے۔ان اعداد و شمار کا جائزہ لینے سے پتہ چلے گاکہ تلگوریاستیں تینوں مسلح افواج میں بھرتی کے معاملہ میں شمالی ہند سے کافی پیچھے ہیں۔ دوسری طرف اے پی کے مقابلہ تلنگانہ سے مسلح افواج کیلئے منتخب ہونے والوں کی تعداد کافی کم ہے۔تینوں افواج میں بھرتی کے معاملہ میں اترپردیش آگے ہے۔تلگو ریاستوں تلنگانہ اور اے پی کے طلبہ ، اولیائے طلبہ کی توجہ صرف چند کورسس اور صرف ملازمتوں پر ہی مرکوز ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ نوجوانوں میں یہ خدشہ پایاجاتا ہے کہ فوج میں ملازمت پر وہ عوامی زندگی سے دور ہوجائیں گے۔اسی لئے اس شعبہ میں جانے سے یہ نوجوان گریز کرتے ہیں۔عوام سے راست تعلق رکھنے کیلئے ہی یہاں ان دونوں ریاستوں کے نوجوان سرکاری ملازمتوں کے تعلق سے دلچسپی رکھتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest