سری نگر۔ جموں قومی شاہراہ دوسرے دن بھی بند، اہلیان وادی مختلف مسائل سے دوچار

سری نگر: وادی کشمیر کو بیرون دنیا کے ساتھ جوڑنے والی سری نگر۔ جموں قومی شاہراہ جمعرات کو بھی تازہ برف باری اور کئی مقامات پر چٹانیں کھسک آنے کے باعث بند رہی۔ایک ٹریفک پولیس عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا کہ 270 کلو میٹر طویل قومی شاہراہ کو جمعرات کے روز بانہال علاقے میں تازہ برف باری سے پھسلن پیدا ہونے اور رام بن علاقے میں چٹانیں کھسک آنے کے پیش نظر بند رکھا گیا۔انہوں نے کہ یہ شاہراہ بند رہنے کے دوران ترجیح اس بات کو دی جائے گی کہ کوئی گاڑی درماندہ نہ ہوجائے اور شاہراہ پر کئی مقامات پر درماندہ گاڑیوں کو اولین فرصت میں پار کرانے کو یقینی بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ موسمیات کی طرف سے جاری ایڈوائزری کے پیش نظر شاہراہ پر ٹریفک بند رکھنے کا فیصلہ لیا گیا۔ادھر لداخ کو وادی کے ساتھ جوڑنے والی واحد قومی شاہراہ اور تاریخی مغل روڑ گزشتہ زائد از ایک سال مسلسل بندہے۔قابل ذکر ہے کہ قومی شاہراہ چھ دنوں تک لگاتار بند رہنے کے بعد 28 جنوری کو یک طرفہ ٹریفک کی نقل وحمل کے لئے کھول دی گئی تھی لیکن ناسازگار موسمی حالات اور کئی مقامات پر چٹانیں کسک آنے کے باعث شاہراہ گذشتہ دو دنوں سے ایک بار پھر بند ہے۔شاہراہ بند رہنے کے باعث اہلیان وادی کو گونا گوں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے جہاں ایک طرف اشیائے ضروریہ کی قلت پڑ جاتی ہے تو وہیں دوسری طرف منافع خور اور ذخیرہ اندوز عناصر گراں فروشی کرنے میں کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کرتے ہیں۔دریں اثنا محکمہ موسمیات نے وادی میں جمعہ سے موسم میں بہتری واقع ہونے کی پیش گوئی کی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest