سوشل میڈیا کے ذریعے داغ رہے ہیں سوال پر سوال

عوامی بیداری کا ایک بہترین پلیٹ فارم ہے سوشل میڈیا۔ لوک سبھا چنائو کے دوران سوشل میڈیا کے ذریعے کی دونوں بڑی سیاسی جماعتوں کے امیدواروں پر سوال داغے جارہے ہیں،سوشل میڈیا پر ایسے طنزیہ سوالات عوامی نمائندئوں پر داغے جارہے ہیں جن کا جواب ملنا مشکل معلوم ہوتاہے، سوشل میڈیا کے سوالات نہ صرف حقیقت پر مبنی معلوم ہوتے ہیں بلکہ ان پر تحریر کرنے کی ہمت اچھوں اچھوں میں نہیں ہوتی ہے پترکار ہیم راج رگھوونشی نے موجودہ ممبرآف پارلیمنٹ سے جوسوال کیا ہے اس کالب لباب یہ ہے کہ آج مہارانہ پرتاپ جینتی ہے ،کھنڈوہ پارلیمانی حلقے میں 40سال سے راجپوت ممبرآف پارلیمنٹ اقتدار میں ہے، پورے کھنڈوہ پارلیمانی حلقے میں(لگ بھگ 8اسمبلی حلقہ ) میں مہارانہ پرتاپ کا مجسمہ کیوں نہیں لگاپائے، ضلع کانگریس کمیٹی کے ترجمان اجے اداسین بھی ٹھیٹ مزاجیہ انداز میں اپنی مخالف جماعت کی جملہ کارگذاریوں پراور موجودہ سرکار ایسے سوال داغتے ہیں جن کو پڑھ کرہنسی آئے گی لیکن اس پر ردعمل یا جواب لکھنے کی جرأت مشکل سے دیکھنے کو ملے گی۔ سوشل میڈیا پر تیس سال بنام 5سال کا نعرہ بھی خوب گونج رہاہے، ہر پارٹی کاکارکن اپنے اپنے نیتائوں کی خوبیوں کا خوب بکھان کررہے ہیں لیکن عوام خوب بہتر طریقے سے جانتی ہے کہ کس نے کیاکام کیاہے، باوجوداسکے 19؍مئی کو خاموشی کے ساتھ اپنے رائے دہند گی کااستعمال کرکے عوام مستحق او رحق دار کاہی انتخاب کرکے تاج پہنائیں گے ان کے فیصلے کیلئے 23؍مئی تک انتظار کرنا پڑے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram