شاہین باغ کو ملا سکھوں کا ساتھ۔ کہاسنگھرش کرو ہم تمھارے ساتھ ہیں

پوری دنیا میں جس طرح تحریر اسکوائر چرچا میں تھا ایسے ہی اس وقت شاہین باغ چرچا میں ہے ۔اس کو چاروں طرف سے سب کا ساتھ مل رہا ہے کل رات کے تقریباََ ڈیڑھ بجے کے قریب سکھوں کا ایک دستہ تم سنگھرش کرو ہم تمہارے ساتھ ہیں اور قومی شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف نعرے لگاتے ہوئے شاہین باغ اسکوائر پر آیا اور انہوں نے آتے ہی ماحول بدل دیا۔
پنجاب سے آنے والے سکھوں کے دستے نے شاہین باغ پہنچ کر یہاں احتجاج کر رہیں خواتین کی نہ زبردست حمایت کی بلکہ ساتھ دینے کا وعدہ بھی کیا۔ ایک طرف مسلم خواتین بیٹھی تھیں تو دوسری طرف سکھوں کا جتھاجس میں سکھ خواتین بھی شامل بیٹھی تھیں۔ شاہین باغ مذہبی یگانگت، قومی اتحاد اور آئین کے خلاف جنگ کا الگ ہی نظارہ پیش کر رہا تھا۔۔پنجاب کے ضلع بٹھنڈہ سے دستہ کے ساتھ آنے والی کلدیپ کور نے بتایا کہ ہم لوگ شاہین باغ مسلم خواتین کی جو قومی شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کی مخالفت کر رہی ہیں، ان کی حمایت کرنے آئے ہیں۔انہوں نے الزام لگایا کہ مودی حکومت فرقہ وارانہ ذہنیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس طرح کا قانون لیکر آئی ہے اور اس طرح فرقوں کے درمیان لڑانے کا کام کر رہی ہے۔ پنجاب میں بھی اس کے خلاف مظاہرےہورہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مودی حکومت کو اس طرح قانون سازی سے باز آنا چاہئے۔
خواتین کے مظاہرہ کا تذکرہ نہ صرف ہندوستان کے کونے کونے میں ہورہا ہے بلکہ پوری دنیا میں اور دنیا کی ہر یونیورسٹی میں اس کا ذکر ہورہا ہے اوران کی حمایت میں مظاہرے کئے جانے کی خبریں بھی مسلسل موصول ہورہی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *