شہر بے ثمر

رنگ بدل کر
موسموں کی طرح
میرے اپنوں نے
ہر جذبہ احلاص کو
ریت کے مانند
ذرہ ذرہ
بے حس و بیزار کردیا
زندگی کے طلسم خانے میں
رشتوں کے
اس شہر بے ثمر میں
میری اچھائیاں ہی
مجھے ڈ س گئیں
اور
سمجھا گئیں
کتاب زیست کا
ایک اور سبق
ام ماریہ حق

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram