سکھ فسادات کا معاملہ

سجن کمار کی ضمانت کی عرضی پر سماعت سے جسٹس سنجیو کھنہ نے خود کو الگ کرلیا

نئی دہلی: سکھ مخالف فسادات کے ایک معاملے میں عمر قید کی سزا کاٹ رہے سابق کانگریسی رہنما سجن کمار کی ضمانت کی عرضی پر سماعت کرنے والی بنچ کے جسٹس سنجیو کھنہ نے خود کو اس سے الگ کرلیا۔اب یہ معاملہ تفصیلی سماعت کے لئے دوسری بنچ کے سامنے پیش کیا جائے گا۔چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی قیادت والی بنچ نے پچھلی سماعت میں سجن کمار کی اپیل پر مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی) کو نوٹس جاری کرکے چھ ہفتہ کے اندر جواب دینے کے لئے کہا تھا۔سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی کے قتل کے بعد ۱۹۸۴ء میں دہلی سمیت ملک کے دیگر حصوں میں سکھ مخالف فسادات پھوٹ پڑے تھے۔ سجن کمار کو دہلی میں انہیں فسادات کے ایک معاملے میں ہائی کورٹ نے عمر قید کی سزا سنائی تھی۔ سابق ممبر پارلیمنٹ نے اسی فیصلے کو چیلنج کرتے ہوئے سپریم کورٹ میں عرضی دائر کی تھی۔ سجن کمار نے سزا کے بعد ۳۱؍ دسمبر ۲۰۱۸ء کو کڑکڑ ڈوما عدالت میں خودسپردگی کی تھی۔ سابق ممبر پارلیمنٹ شمال مشرقی دہلی کی منڈاولی جیل میں سزا کاٹ رہے ہیں۔ انہوں نے اس فیصلے کو چیلنج کرتے ہوئے سپریم کورٹ میں عرضی دائر کی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *