سید حامد فائونڈیشن دہلی کی جانب سے تعلیمی بیداری کارواں کا ریاست بہار کا دورہ

اس کارواں کا مقصد علمی رجحان کی ترویج اور اس راہ میںدرپیش مشکلات کا تدارک ہے: امان اللہ خان، کنوینر کارواں۔
ہندوستانی مسلمانوں کی تعلیمی بہبود کے لئے سید حامد صاحب کی خدمات اثاثہ کی حیثیت رکھتی ہیں۔ ان کی خدمات کے اعتراف میں تشکیل دیا جانے والا سید حامد فائونڈیشن، نئی دہلی نے بھی ان کے منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کے لئے اپنی تگ و دو روزِ اول سے ہی جاری رکھی ہے۔ اسی ضمن میں ایک تعلیمی کارواں ہندوستان میں تعلیمی اور فلاحی سرگرمیوں کے حوالے سے ایک انتہائی معتبر نام محب قوم و ملت اور آر ۔ کے۔ ماڈل اسکول، سیوان کے بانی امان اللہ خان کی نگرانی میں مورخہ ۴؍نومبر ۲۰۱۸ء کو آر۔کے۔ماڈل اسکول ، سیوا ن سے نکلے گا اور ریاست بہار کے مختلف اضلاع کا دورہ کرتے ہوئے مورخہ ۱۱؍نومبر ۲۰۱۸ء کو پٹنہ میں اختتام پذیر ہوگا۔
بہار کے مسلمانوں کی تعلیمی و سماجی بہتری کے پیشِ نظر نکالے جارہے اس تعلیمی کارواں کا اولین مقصد اس صوبے کی مسلم آبادی کو تعلیمی طور پر بیدار کرنا اور تعلیم و تعلم کی راہ میں حائل مشکلات کا حل مشترکہ طور پر ڈھونڈنا ہے۔ یہ کہنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے کہ بہار ہندوستان کی پسماندہ اور غریب ریاستوں میں سے ایک ہے اور خاص طورپر اس ریاست کے مسلمان اپنے کمزور اقتصادی پس منظر کے تحت اپنے بچوں اور بچیوں کو زیورِ تعلیم سے آراستہ کرنے سے مجبور ہوتے ہیں مگر اس کے علاوہ ایک سچائی اور بھی ہے اور وہ تعلیمی رجحان کا فقدان ہے۔ لہٰذا اس تعلیمی کارواں نے مختلف اضلاع کے دانشور، اساتذہ، سماجی شخصیات اور معززین سے ملاقات اور مذاکرہ کا ارادہ کیا ہے اور اس ضمن میں اجتماعات اور جلسوں کا بھی نظم رکھا ہے تاکہ ہم حصول تعلیم کی راہ میں زمینی سطح پر درپیش مسائل سے آگاہی حاصل کرسکیں اور اس کے تدارک نیز تعلیمی رجحان کی ضرورت اور اس دور میں تعلیم کی اہمیت و افادیت سے مسلم معاشرہ کے ہر ایک فرد کو آشنا کرسکیں۔ تعلیمی بیداری اور اس کے ذریعہ ملک میں اپنے حقوق کی بازیافت کے تعلق سے تعلیمی کارواں کاایک مثبت اورموثر پیغام کے ساتھ آگے بڑھنے کا نصب العین رکھنا ہے اور اس ضمن میں پورے مسلم معاشرے سے تعاون کا طلبگار ہے ۔ امان اللہ خان نے بہار کے مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنی بھرپور شرکت سے تعلیمی بیداری کارواں کو کامیاب بنائیں اور مسلم سماج خصوصاً نئی نسل کو تعلیم یافتہ بنانے میں اپنا کردار اداکریں۔
اس کارواں کا افتتاحی اجلاس مورخۂ ۴؍نومبر ۲۰۱۸ء ، بروز اتوار صبح ۱۰؍بجے آر۔ کے۔ ماڈل اسکول، اسمعٰیل شہید روڈ ، سیوان میں منعقد ہوگا۔ جس میں دہلی ، یوپی، بنگال اور بہار کے دانشوران اور علماء خطاب فرمائیں گے۔ افتتاحی اجلاس کے بعد ۲؍بجے علماء دانشوران اور مفکرین پر مشتمل یہ کارواں گوپال گنج کے لئے روانہ ہوگا اور پروگرام کے مطابق ۴؍نومبر کی شام کو گوپال گنج میں منعقد ہونے والی تعلیمی کانفرنس میں شرکت کرے گا اور رات میں قیام کے بعد دوسرے دن ۵؍نومبر کی صبح اپنے اگلے پڑائو موتی ہاری کے لئے روانہ ہوجائے گا۔ صبح ۱۰؍ تا ۱؍بجے موتی ہاری میں عوامی جلسے سے خطاب کرنے کے بعد دوپہر کے بعد اراکین کارواںعلمی جھنڈے کو پھیرانے کے لئے سیتا مڑھی کی طرف کوچ کریں گے۔ ۶؍نومبر کو مظفرپور اور سمستی پور، ۷؍نومبر کو مدھوبنی اور دربھنگہ،۸؍نومبرکو سہرسہ اور کھگڑیہ، ۹؍نومبر کو بیگوسرائے اور کشن گنج ، ۱۰؍نومبر کو بھاگلپوراور بہار شریف ہوتے ہوئے یہ تعلیمی بیداری کارواں ۱۱؍نومبر ۲۰۱۸ء کی صبح پٹنہ پہونچے گا جہاں اس کا اختتامی اجلاس منعقد ہوگا جس میں زعماء کرام شریک ہوں گے۔ مزید معلومات کے لئے اگلے اعلان کا انتظار کریں۔ پروگرام کے منتظم جناب یعقوب اشرفی صاحب ، پٹنہ ، موبائل۹۴۳۱۰۳۷۱۲۴سے بھی رجوع کرسکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *