پلوامہ دہشت گردانہ حملہ، ہندوستان نے حریت رہنماؤں کو دی گئی سیکورٹی واپس لے لی

سرینگر: پلوامہ حملے کے بعد ہندوستان نے سخت قدم اٹھاتے ہوئے کشمیری حریت رہنماؤں کو دی گئی سیکورٹی واپس لے لی ہے۔ وزارت داخلہ نے حریت رہنماؤں کی سیکورٹی واپس لینے کا باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کیا ہے۔ وزارت داخلہ کے نوٹیفکیشن کے مطابق حریت رہنماؤں میرواعظ عمرفاروق، عبدالغنی بھٹ، بلال لون، ہاشم قریشی اورشبیرشاہ کودی گئی سیکورٹی واپس لے لی گئی ہے اوران رہنماؤں کو مہیاکی گئی سرکاری سہولتیں بھی فوراً واپس لینے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ حکومت کی طرف سے یہ اقدام پلوامہ حملے کے بعد اٹھایا گیا ہے۔سیکیورٹی اور گاڑیوں کی واپسی سے متعلق آل پارٹیز حریت کانفرنس (میر واعظ) کے ترجمان نے کہا ہے کہ قیادت کو کبھی بھی کٹھ پتلی انتظامیہ کی سیکیورٹی کی ضرورت نہیں رہی، حریت رہنما کئی مرتبہ یہ کہہ چکے ہیں کہ انہیں ملنے والی سیکیورٹی اور گاڑیاں واپس لے لی جائیں۔دوسری طرف بھارتی ریاستوں اور جموں میں ہندوانتہا پسندوں کی جانب سے مسلمان کشمیریوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کردیا گیا ہے۔ کشمیریوں کی املاک، گاڑیوں اور کاروبار کو نذر آتش کیا جا رہا ہے۔ جس کے خلاف وادی میں مکمل ہڑتال کی جارہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram