پرگیا ٹھاکر پر فرقہ وارانہ تقریریں کرنے کا الزام ۔ایک اور بڑا جھٹکا۔عرضی خارج

جبل پور۔ مدھیہ پردیش کے ہائی کورٹ نے پرگیا ٹھاکر کی اس عرضی کو خارج کردیا ہے جس میں ان کے خلاف دائر انتخابی عرضی کو ناقابل سماعت بتایا گیا تھا۔بھوپال کے رہنے والے راکیش دیکشت کی جانب سے دائر کی گئی انتخابی عرضی میں کہا گیا تھا کہ سادھوی پرگیا نے انتخابات کے دوران فرقہ وارانہ تقریر یں کی ہیں۔ اس کے علاوہ انہوں نے ووٹ حاصل کرنے کے لئے مذہبی جذبات کو بھڑکانے سے متعلق باتوں کا ذکر بھی اپنی تقریر میں کیا۔عرضی میں عائد کئے گئے الزامات کی تصدیق کے لئے سادھوی کی تقریر کی سی ڈی اور اخبارات میں شائع خبروں کے تراشے بھی پیش کئے گئے تھے۔اب اس سے ذیادہ اور کیا ثبوت ہونگے کہ سادھوی کھلم کھلا مسلمانوں کو گالیں دیتی ہیں برا بھلا کہتی ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram