افغان طالبان سے امن کی کوششوں میں مولانا سمیع الحق سے ثالثی کی اپیل

اسلام آباد: افغان حکومت نے معروف عالم دین اور جمعیت علمائے اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق سے اپیل کی ہے کہ وہ افغان طالبان سے امن بات چیت کی کوششوں میں ثالثی کریں۔ جرمن خبررساں ادارے کے مطابق افغانستان کے اعلیٰ وفد نے جمعیت علمائے اسلام (س) کے امیرمولانا سمیع الحق سے ملاقات کی جس میں افغان صوبے ننگرہار کے سابق گورنرعطااللہ لودین، کابل حکومت کی قائم کردہ امن کمیٹی کے رکن قاسم حلیمی اورکئی دیگرنمایاں شخصیات شامل تھیں۔
واضح رہے کہ ملاقات میں کابل حکومت کے وفد کی جانب سے مولانا سمیع الحق کوافغان طالبان کے مابین بات چیت کی کوششوں میں ثالثی کا کردارادا کرنے کی درخواست کی گئی، جس پرمولانا سمیع الحق نے یہ کہا کہ پہلے مرحلے میں افغان مذہبی رہنماؤں اورطالبان کے مابین ایک خفیہ ملاقات کا اہتمام ہونا چاہیے، جس میں امریکا اورپاکستان کی کوئی مداخلت نہ ہو۔
قابل ذکر ہے کہ مولانا سمیع الحق نے اس وفد کے ارکان کوبتایا کہ وہ خود بھی یہ چاہتے ہیں کہ افغانستان میں لڑائی اورخونریزی ختم ہونی چاہیے جب کہ اسلام کی برتری کے ساتھ اس ملک کی آزادی بحال ہونا چاہیے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest