بزم اظہار کا ماہانہ طرحی مشاعرہ منعقد

ہے خریدار تو نکل گھر سے٭بیچنے آیا ہے ہنر کوئی

پٹنہ(رہبر گیاوی):بزم اظہار کا ۲۷ واں ماہانہ طرحی مشاعرہ گذشتہ روز منعقد کیا گیا جس کی صدارت بزرگ،استاذالاساتذہ،زود گو اور کہنہ مشق شاعر جناب مرغوب اثر فاطمی نے فرمائی جبکہ نظامت کے فرائض منفرد لب ولہجہ کے جواں سال شاعر م سرور پنڈولوی نے بخیروخوبی انجام دئے۔اس مشاعرہ کے لئے مصرع طرح” اب سلامت نہیں ہے سر کوئی” دیا گیا ؟ جن شعراء نے اپنے کلام سے نوازا ان کے نام مع نمونۂ کلام اس طرح ہیں ؎
مرغوب اثر ؔفاطمی
وسوسوں کے گھنے اندھیرے میں٭رفعتوں کی کہاں ڈگر کوئی
نذر ؔفاطمی
عمر گذری مکاں بنانے میں٭پھر بھی مزدور کا نہ گھر کوئی
سعیدؔ رحمانی
اونچے اونچے مکان ہر جانب٭ان میں ملتا نہیں ہے گھر کوئی
پروفیسر ناظمؔ قادری
اہل دل کی دعا ضروری ہے٭جب دوا میں نہ ہو اثر کوئی
ڈاکٹر اعجاز ؔمانپوری
عارضی یہ ترا ٹھکانہ ہے٭دائمی ڈھونڈ لے نگر کوئی
محمد انعم ؔپرتاپ گڈھی
اے خدا مجھ کو دے ہنر کوئی٭یا دعائوں میں دے اثر کوئی
م سرور ؔپنڈولوی
مسئلوں کی ہے زد میں ہر کوئی٭کیوں ٹھہرتا بھی دیکھ کر کوئی
شکیل ؔسہسرامی
رشک پرواز بھی کرے تجھ پر٭اب تو ایسی اڑان بھر کوئی
مقصود عالم رفعتؔ
عید کا چاند اک بہانہ ہے٭آنے والا ہے بام پر کوئی
بشر ؔرحیمی
در گذر کردیا خطا اس کی٭پھوٹ کر رویا اس قدر کوئی
رہبرؔ گیاوی
کیسے رہتے ہیں لوگ برزخ میں٭آکے دیتا نہیں خبر کوئی
جہانگیر نایابؔ
ہے خریدار تو نکل گھر سے٭بیچنے آیا ہے ہنر کوئی
ڈاکٹر ممتاز منورؔ
ظلم ڈھانے میں وہ تو ماہر ہے٭اس نے چھوڑی نہیں کسر کوئی
رحمانؔ آہی
اک جگہ ٹھیرنا نہیں بس میں٭ہو میسر نیا سفر کوئی
پردیسیؔ کابری
حکمرانی کہاں نہیں میری٭مجھ سے باقی ہے بحروبر کوئی
اصغر ؔشمیم
راہ تکتی رہی نظر میری٭پھر بھی آیا نہیں ادھر کوئی
وارثؔ اسلام پوری
اپنا اپنا نصیب ہے یارو٭فرش پر کوئی عرش پر کوئی
سبطین پروانہؔ
اک زمانہ تھا ملنے آتے تھے٭شام ہوتے ہی میرے گھر کوئی
اظہر ؔرسول
یہ تو قدرت کا کھیل ہے یارو٭کوئی مفلس تو تاجور کوئی
جاویدؔ سلطان
دل تڑپتا ہے میرا جس کے لئے٭کاش اس کو بھی ہو خبر کوئی
صدر مشاعرہ کی اجازت سے یہ مشاعرہ اپنے اختتام کو پہنچا۔آئندہ ماہ کے لئے مصرع طرح ” ہم کو خوش گفتار ہونا چاہئے ” قوافی:گفتار،کردار وغیرہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest