مودی کی تاجپوشی بھی اور ای وی ایم کے خلاف مظاہرےبھی

نئی دہلی: الیکڑانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کے خلاف خواہ اپوزیشن پارٹیاں بھلے ہی خاموش ہوں اور سڑک پر نظر نہ آ رہی ہوں لیکن سماجی کار کنان ایک مرتبہ پھر ای وی ایم کے خلاف آواز بلند کر رہے ہیں اور مطالبہ کر رہے ہیںکہ اگر جمہوریت کوبچانا ہے تو پھر ای وی ایم کو ہٹانا ہوگا اور بیلٹ پیپر سے دوبارہ انتخابات کرانا ہوگا۔ ایک طرف جب وزیراعظم نریندر مودی دوسری مرتبہ اپنی نئی کابینہ کے ساتھ حلف لینے جارہے تھے اور 8000 سے زائد مہمانوں کا ہجوم راشٹرپتی بھون میں موجود تھا دوسری طرف ملک گیر سطح پر ای وی ایم کے خلاف علم احتجاج بلند کیا جا رہا تھا۔ یہاں جنتر منتر پر بھی سیکڑوں سماجی کار کنان نے چلچلاتی دھوپ میں احتجاجی دھرنادیتے ہوئےای وی ایم کے خلاف آواز بلند کی۔مفروف سماجی کارکن انہد کی روح رواں شبنم ہاشمی کی قیادت میں جنتر منتر پر ای وی ایم کے خلاف احتجاج بلند کیاگیا جسمیں بے حد فعال سماجی کارکن شیبا اسلم سماجی کارکن لینا دبیر ،دہلی یونیورسٹی کی پروفیسر نندتا ناارائن اور سینکڑوں لوگوں نے زبردست مظاہرہ کیا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram