وزیر اعظم نے شہری ترمیمی بل پر عوام سے حمایت طلب کی

کلکتہ: لوک سبھا انتخابات سے قبل وزیرا عظم نریندر مودی شمالی 24پرگنہ کے ٹھاکر نگر میں ریلی سے خطاب کرتے ہوئے عوام سے ”شہری ترمیمی بل“ پر حمایت طلب کرتے ہوئے کہا کہ بنگلہ دیش، افغانستان، پاکستان اور برما سے آنے والے ہندو، سکھ،عیسائی اور بدھشٹوں کو شہریت دینے کیلئے پارلیمنٹ میں قانون لارہے ہیں۔اور ترنمول کانگریس سے حمایت طلب کی ہے وہ حمایت دینے کو تیار نہیں ہے۔وزیرا عظم مودی نے متوا سماج کے بانی ہری چند ٹھاکر کے سماج کی تعمیر میں اہم کردار کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت متوا سماج کے ساتھ ہے اور انہیں ہندوستانی شہریت دینے کیلئے اقدامات کررہے ہیں۔خیال رہے کہ ٹھاکر نگر متوا سماج کا گڑھ ہے اور یہیں متواسماج کی سربراہ بڑی ماں رہتی ہے۔وزیرا عظم مودی نے کانگریس کے ذریعہ کسانوں کے قرض معافی کی سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ صرف آنکھ میں بالو جھونکنے کے علاوہ کچھ بھی نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ کرناٹک اور مدھیہ پردیش میں کسانوں کے ساتھ قرض معافی کے نام پر مذاق کیا جارہا ہے۔مگر ہم نے ایک ایسے نظام کو متعارف کیا ہے جس کے ذریعہ کسانوں کو اب سنڈیکٹ ٹیکس نہیں دینا پڑے گا بلکہ برا ہ راست کسانوں کے اکاؤنٹ میں روپے جائیں گے۔وزیر اعظم نے کہا کہ جن کسانوں نے قرض نہیں لیے ہیں ہم ان کسانوں کو قرض بھی دیں گے اور اس کو معاف بھی کریں گے۔وزیر اعظم نے کہا کہ کرناٹک میں قرض ادا نہیں کرنے والے کسانوں کو پولس سختی کررہی ہے۔اور بنگال کی وزیرا علیٰ کرناٹک کے وزیرا علیٰ کی حمایت کرتی ہے۔وزیرا عظم نریندر مودی نے کہا کہ ٹھاکر نگر کا میدان سامعین کیلئے ناکافی ہوگیا ہے۔بڑی تعداد میں لوگ باہر ہیں۔ آپ کے جوش و جذبات کو دیکھ کر مجھے یقین ہوگیا ہے کہ بنگال کے عوام تبدیلی چاہتے ہیں اور یہ تبدیلی آکر رہے گی۔آپ لوگ میرے دل کے قریب ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *