کیا سچ میں جیش محمد کے سرغنہ مسعود اظہر کی موت ہوچکی ہے؟

نئی دہلی: پلوامہ حملہ کے بعد ہندوستان اور پاکستان کے درمیان تنائو برقرار ہے۔ بلکہ دن بہ دن یہ کشیدگی بڑھتی ہی جارہی ہے۔ ابھی حال ہی میں ہندوستان کے ذریعہ پاکستان پر کئے گئے فضائی حملے کے بعد دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔خبر ہے کہ دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے سرغنہ مسعود اظہر کی موت ہوگئی ہے۔ ذرائع سے ملی خبر کے مطابق وہ لیور کینسر سے جوجھ رہا تھا اور اسلام آباد کے آرمی اسپتال میں اس کی دو مارچ کو موت ہوگئی ہے۔ حالانکہ اس خبر کی تصدیق یاوضاحت نہیں ہوسکی ہے۔ دو دن پہلے ہی پاکستان نے یہ مانا تھا کہ مسعود اظہر پاکستان میں ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ پاکستانی فوج کی اجازت کے بعد مسعود کی موت کا سرکاری طور پر باضابطہ اعلان کیاجائے گا۔حالانکہ ابھی تک جیش محمد یا پاکستان نے مسعود اظہر کی موت کے بارے میں کچھ بھی اعلان نہیں کیا ہے۔
واضح رہے کہ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی ایک انٹرویو کے دوران بری طرح پھنس گئے۔ ایک سوال کے جواب میں شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ان کی حکومت دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے ساتھ رابطہ میں ہے۔ اس کے بعد جب بی بی سی کے صحافی نے قریشی سے پوچھا کہ پلوامہ حملے کے بعد جیش سے کس نے رابطہ کیا تھا تو پاکستانی وزیر خارجہ سے جواب دیتے نہیں بنا۔ شاہ محمود قریشی پہلے تو ہکلانے لگے پھر کسی طرح سے صورت حال کو سنبھالنے کی کوشش میں جٹ گئے۔ہندوستان اور پاکستان کے درمیان پلوامہ حملے کے بعد کشیدگی کی صورت حال برقرار ہے۔ حال ہی میں ہندوستان کے ذریعہ پاکستان پر کئے گئے فضائی حملے کے بعد کشیدگی میں مزید اضافہ ہوا ہے۔ جیش محمد نے پلوامہ حملہ کی ذمہ داری لی تھی۔ جب اس بارے میں بی بی سی کے صحافی نے سوال کیا تو قریشی نے کہا’’ ہمیں اس پر یقین نہیں ہے‘‘۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram