مرکزی وزارت داخلہ کی رپورٹ

تین سال میں پیرا ملٹری فورس کے تقریباً ۴۰۰؍ جوان شہید ہوئے

نئی دہلی:ملک بھر حفاظتی انتظامات کو اپنے کندھوں پر لینے والے اور ملک کی حفاظت کےلیے مر مٹنے والے جوان اورپیرا ملٹری فورس کے ہندوستان-پاکستان بارڈر پر گولہ باری ، ملک بھر میں ہوئے دہشت گردانہ اور نکسلی حملے اور دیگر تشدد کی وجہ سے گزشتہ ۳؍ سالوں میں تقریباً۴۰۰؍ جوان شہید ہوئے ہیں۔ مرکزی وزارت داخلہ کی ایک رپورٹ سے یہ بات سامنے آئی ہے۔ وزارت کے ایک افسر کے مطابق سب سے زیادہ بی ایس ایف کے جوان مارے گئے ہیں۔ پاکستان اور بنگلہ دیش سے لگی سرحدوں کی حفاظت کرنے والےبارڈر سکیورٹی فورس (بی ایس ایف) نے ۲۰۱۵ء سے ۲۰۱۷ء کے درمیان تقریباً ۱۶۷؍ جوانوں کو کھویا ہے۔ ذرائع کے مطابق بی ایس ایف نے ۲۰۱۵ء میں ۶۲؍ جوان کھوئے، ۲۰۱۶ء میں ۵۸؍ جبکہ ۲۰۱۷ء میں۴۷؍ جوان مارے گئے۔ گزشتہ ۳؍سالوں سینٹرل ریزرو پولیس فورس( سی آر پی ایف )کے ۱۰۳؍ جوان مارے گئے ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر جوان نکسلی سرگرمیوں اور جموں و کشمیر میں دہشت گردوں سے مقابلہ کرتے ہوئے مارے گئے۔ سی آر پی ایف نے ۲۰۱۵ء میں۹، ۲۰۱۶ء میں۴۲؍ اور ۲۰۱۷ء میں ۵۲؍ جوان کھوئے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ ۳؍سالوں میں (ایس ایس بی )کے ۴۸؍ جوان مارے گئے،جن میں ۲۰۱۵ء میں ۱۶، ۲۰۱۶ء میں۱۵؍ اور ۲۰۱۷ء میں ۱۷؍ جوان مارے گئے۔ ایس ایس بی ہندوستان-بھوٹان اور ہندوستان -نیپال سرحد کی حفاظت کرتا ہے۔ اس کے ساتھ ہی ہندوستان اور چین کی سرحد پر تعینات ہندوستان تبت بارڈر پولیس ( آئی ٹی بی پی)کے ۴۰؍ جوان مارے گئے۔جن میں ۲۰۱۵ء میں ۱۵، ۲۰۱۶ء میں ۱۰؍ اور ۲۰۱۷ء میں ۱۵؍ جوان مارے گئے۔ وہیں ہندوستان اور میانمار بارڈر پر تعینات آسام رائفلس کے ۳۵؍ جوان ،ان ۳؍سالوں میں مارے گئے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest