جموں وکشمیر:پلوامہ میں اُری سے بھی بڑا دہشت گردانہ حملہ، 42 سی آر پی ایف جوان شہید، 45 زخمی

جموں و کشمیرکے پلوامہ میں اری سے بھی بڑا دہشت گردانہ حملہ ہوا ہے۔ حملے میں بیالیس سے زیادہ جوان شہید ہوئے ہیں، وہیں کئی جوان شدید طور پر زخمی ہیں۔ یہ حملہ جموں و کشمیر ہائی وے پر سی آر پی ایف کے قافلے کو نشانہ بنا کر کیاگیا ہے۔ اس قافلے میں ۲۳۰۰؍ جوان شامل تھے۔ بتایاجاتاہے کہ 20 سال میں سب سے بڑا دہشت گردانہ حملہ ہوا ہے۔ پلوامہ میں اونتی پورہ کے گوری پورہ علاقے میں سی آر پی ایف کے قافلے پر دہشت گردوں نے آئی ای ڈی سے بڑا دہشت گردانہ حملہ کیا ہے پھر تابڑتوڑ فائرنگ کی۔ ذرائعکے مطابق جموںوکشمیر حکومت کے صلاح کار کے۔وجے کمار نے حملے میں 42 جوانوں کے شہید ہونے کی تصدیق کی ہے جبکہ 45 جوانوں کے زخمی ہونے کی خبر ہے۔ شہیدوں کی تعداد بڑھ بھی سکتی ہے۔اس حملے کے بعد سیاست تیز ہوگئی ہے۔ تمام سیاسی لیڈروں نے اس حملے کی مذمت کی ہے۔ اور شہید ہونے والے جوانوں کے لواحقین کے ساتھ اظہار ہمدردی بھی کی گئی ہے۔ آپ کو بتادیں کہ حملے کے بعد جنوبی کشمیر میں انٹرنیٹ خدمات بند کردی گئی ہیں۔اس کے علاوہ پلوامہ حملے پر وزیر اعظم نریندر مودی نے ٹویٹ کرکے لکھا کہ ویر جوانوں کی قربانی بیکار نہیں جائے گی۔ پی ایم مودی نے بتایا کہ پلوامہ میں حملے کے مد نظر حالات کو لیکر میں نے وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ جی اور دیگر سینئر افسران سے بات کی ہے۔دہشت گرد تنظیم جیش محمد نے اس حملے کی ذمہ داری لی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest