جامعہ میلہ اسلامیہ کی پہلی خاتون وائس چانسلر پروفیسر نجمہ اختر بنیں

پروفیسرنجمہ اختر کو جامعہ ملیہ اسلامیہ کی نئی وائس چانسلر مقرر کیا گیا ہے۔ ایسا پہلی بار ہے جب کسی خاتون کو اس یونیورسٹی کا وائس چانسلر بنایا گیا ہے۔پروفیسرنجمہ اختر شہرت یافتہ تعلیم گاہ جامعہ ہی نہیں دہلی میں واقع کسی بھی مرکزی یونیورسٹی کی پہلی خاتون چانسلر بنی ہیں۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ کی 96 سالہ تاریخ میں یہ پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ کسی خاتون کو سب سے اعلیٰ عہدہ ملا ہے۔بہرکیف جامعہ کیلئے فخرکی بات ہے۔پروفیسر نجمہ اختر نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف پلاننگ اینڈ ایڈمنسٹریشن کی ممبر ہیں۔ ساتھ ہی وہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی گولڈ میڈلسٹ بھی ہیں۔ قابل غور ہے کہ انہوں نے کروکشیتر یونی ورسٹی سے پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی ہے۔قابل ذکرہے کہ اس تقرری کیلئے انسانی وسائل کی ترقی کی وزارت سے ملی تجویز کو صدر رام ناتھ کووند نے اپنی منظوری دے دی ۔وزارت نے جامعہ ملیہ اسلامیہ (دہلی)، مہاتما گاندھی سنٹرل یونیورسٹی (موتیہاری، بہار) اور مہاتما گاندھی بین الاقوامی ہندی یونیورسٹی (وردھا مہاراشٹر) کے وائس چانسلر زکی تقرری کے لئے صدرجمہوریہ ہند کو کل 9 نام (ہر یونیورسٹی کے لئے 3 نام) بھیجے تھے ۔ مرکزی یونیورسٹی کے وزیٹر کے طور پر صدر جمہوریہ ان ناموں کو اپنی منظوری دیتے ہیں۔وزارت کے ایک سینئر افسر نے کہا، ’نجمہ اختر کو جامعہ کی وائس چانسلر جبکہ سنجیو شرما اور رجنیش کمار شکلا کو بالترتیب موتیہاری سینٹرل یونیورسٹی اور وردھا مہاتما گاندھی یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے طور پر مقرر کیا گیا ہے‘‘۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest