موت کو مرکے دیکھنا چاہتا تھا جے این یو کا طالب علم

جے این یو میں ایم اے انگریزی کے ایک طالب علم نے خود کشی کر لی ہے ،خودکشی کا سبب ابھی تک معلوم نہیں ہوسکا ہے. بتایا جارہا ہے کہ طالب علم نے خودکشی سے قبل اپنے استاد کو ایک ای میل بھیجا تھا . پولیس اس معاملے کی جانچ کر رہی ہے. اس طالب علم کا جسم لائبریری میں پنکھے سے لٹکا ہوا ملا . طالب علم کا نام رشی تھا مس بتایا جاتا ہے.واقعے کی اطلاع ملنے کے بعد جے این یو انتظامیہ نے دوپہر 12 بجے کے قریب پولیس کو اطلاع دی . پولیس کے مطابق تھامس ٹیلی فون کے تار کے سہارے لٹکا ہوا پایا گیا . اس طالب علم نے مبینہ طور پر خودکشی کرنے سے قبل انگریزی کےایک پروفیسر کو ای میل کیا تھا. بقول انگریزی کے پروفیسر انھوں نے فون کر کے پولیس کو بلایا. انھوں نے کہا کہ مجھے ایک مقتول سے ای میل ملا ہے جس میں اس نے لکھا ہے کہ بڑے دنوں سے یہ خواہش ہے کہ موت کو جسمانی شکل میں دیکھوں اس کے علاوہ اس نے اپنے ماں باپ کا خیال رکھنے کی بات کی ہے ،قیاس لگایا جارہا ہے کہ وہ مرنے کے بعد کے حالات جاننا چاہتا تھا . شاید وہ یہ جاننا چاہتا تھا کہ آ خر آدمی مرتا کیوں کر ہے اور موت آتی کیسے ہے ،یہ بھی ہوسکتا ہے کہ اسے یہ لگتا رہا ہو کہ وہ موت کے بعد کے راز جان لے گا اور پھر واپس آجائے گا، واقعہ کے بعد، جنوب مغربی دہلی پولیس نے موقع پر پہنچ کرجانچ شروع کردی ہے.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram