کہیں کسی کشمیری طالب علم پر حملہ نہیں کیا گیا:گورنر

سری نگر: جموں وکشمیر کے گورنر ستیہ پال ملک کی مانیں تو پلوامہ میں سی آر پی ایف کے قافلے پر حملے کے بعد ملک میں پیدا شدہ صورتحال کے دوران کسی بھی کشمیری طالب علم پر حملہ نہیں کیا گیا۔ بقول ان کے ۲۲؍ ہزار کشمیری طلباءو طالبات ملک کے مختلف حصوں میں زیر تعلیم ہیں اور سرکار کی طرف سے تعینات کئے گئے لیزان آفیسرس ان طلباء کا اچھا خیال رکھ رہے ہیں۔ستیہ پال ملک نے نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ کے بیان کہ ‘اگر وادی میں مین اسٹریم سیاسی لیڈران و کارکنوں کی سیکورٹی واپس لینے کے فیصلے پر نظرثانی نہیں کی گئی تو نیشنل کانفرنس عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائے گی پر کہا کہ میں عمر عبداللہ کے سامنے جوابدہ نہیں ہوں اور وہ جہاں جانا چاہتے ہیں جاسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ‘ہمیں جو ٹھیک لگا وہی کیا۔گورنر موصوف نے یہ باتیں ایک نجی ٹی وی چینل کو بتائیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest