گوا کے وزیراعلیٰ منوہر پاریکر نے اپنی کابینہ کی میٹنگ میں غصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا

’’بھلے ہی وہ علیل ہیں لیکن انہیں کوئی ہٹا نہیں سکتا ،ان کے پاس رافیل سودے سے متعلق کچھ اہم دستاویزات ہیں‘‘

نئی دہلی: گوا کے وزیراعلیٰ منوہرپاریکر کافی دنوں سے علیل چل رہے ہیں، کانگریس بار بار گوا کی اسمبلی بھنگ کرنے کا مطالبہ کرتی آرہی ہےلیکن بی جے پی حکومت ان کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لے رہی ہے۔ اسی درمیان مسٹر پاریکر کے حالیہ سے سیاست میں کھلبلی مچ گئی ہے۔ گوا کے وزیر اعلیٰ منوہر پاریکر کا رافیل سودے سے متعلق جو بیان میڈیا میں گردش کررہا ہے وہ کئی طرح کے شبہات کوجنم دیتا ہے اس لئے حکومت کو اس سلسلے میں اپنی پوزیشن واضح کرنی چاہئے۔ کانگریس میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے آج پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد پریس کانفرنس میں کہا کہ اخبارات میں شائع ایک خبر کے مطابق مسٹر پاریکر نے اپنی کابینہ کی میٹنگ میں غصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھلے ہی وہ علیل ہیں لیکن انہیں کوئی ہٹا نہیں سکتا کیوں کہ ان کے پاس رافیل سودے سے متعلق کچھ اہم دستاویزات ہیں۔ مسٹر سرجے والا نے کہا کہ سابق وزیر دفاع کی اس ناراضگی سے خدشہ پیدا ہوتا ہے کہ رافیل گھپلے کے سلسلے میں ان کے پاس ضرور کوئی اہم فائل ہے جس کی وجہ سے وہ حکومت کو دھمکی دے رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر پاریکرطویل عرصے سے علیل ہیں لیکن انہیں عہدے سے ہٹایا نہیں جارہاہے۔ کانگریس پہلے بھی ان کو ہٹانے کا مطالبہ کرچکی ہے لیکن اس پر توجہ نہیں دی جارہی ہے۔کانگریس کے ترجمان نے کہا کہ حکومت رافیل سے متعلق دستاویزات پارلیمنٹ اور سپریم کورٹ میں داخل کرنے کے لئے تیار نہیں ہے۔ اس گھپلے کے سلسلے میں مسٹر پاریکر کا بیان کافی شبہ پیدا کرنے والا ہے اس لئے حکومت کو پوزیشن واضح کرتے ہوئے یہ بتانا چاہئے کہ کس سبب سے علالت کے باوجود مسٹر پاریکر کو وزیر اعلیٰ کے عہدہ سے ہٹایا نہیں جارہا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *