۔لن ترانی ہے تری دعوے سراسر جھوٹے

یہ نیا دور ہے , سچ کے ہیں سکندر جھوٹے
جھوٹ کا راج ہے , راجہ کے ہیں لشکر جھوٹے

دو گھڑی کے لئے آیا ہے تو معلوم ہوا
ہم نے صدیوں میں بنائے جو وہ سب گھر جھوٹے

لانتارانی ہم کو بخشے گا محبت کے حسیں تاج محل
لن ترانی ہے تری دعوے سراسر جھوٹے

ہم کو معلوم ہے فرعون کا انجام ہے سچ

کیسے مانیں کہ ہمارے ہیں پیمبر جھوٹے

خشک ہونٹوں کو لئے صحرا بہ صحرا رہنا
کام آئیں گے نہ پیاسے کے سمندر جھوٹے

کرچی کرچی ہوئے سب امن و محبت کے بھرم
پوجیں پتھر کو, کہ ہم شیشے کے پیکر جھوٹے

دیر سے شہر کے دستور کو جانا ‘مینا’
جو قصیدے نہ لکھیں، ایسے سخنور جھوٹے

…..مینا نقوی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *