چھٹے لوک سبھا انتخابات سے قبل لگائی گئی ایمرجنسی

نئی دہلی: 25 جون 1975 سے 21 مارچ 1977 کے درمیان ایمرجنسی کے دوران شہری حقوق کو ختم کئے جانے کے خلاف لوک نائک جے پرکاش نارائن کی قیادت میں اٹھے طوفان میں اس وقت کی وزیر اعظم اندرا گاندھی کو بھی جڑ سے اکھاڑ دیا اور کانگریس کو عام انتخابات میں پہلی بار شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اس الیکشن میں کچھ ایسے لیڈروں کا عروج ہوا جنهوں نے نہ صرف قومی سیاست کو متاثر کیا بلکہ اقتدار کی چوٹی پر بھی پہنچے۔ اس انتخابات کے بعد جنتا پارٹی بنی لیکن اس کے لیڈر تکنیکی طور سے بھارتیہ لوک دل کے ٹکٹ پر الیکشن جیتے تھے۔سال 1977 میں ہونے والے چھٹے لوک سبھا انتخابات سے قبل لگائی گئی ایمرجنسی سے ’ناراضگی‘ سے پیدا ہونے والی’ جنتا لہر‘ نے نہ صرف کانگریس کا صفایا کر دیا بلکہ تین دہائی سے ملک پر حکومت کر نے والی پارٹی کو اقتدار سے بے دخل کر دیا۔
گاندھی نہرو خاندان کی سیٹ مانی جانے والی اترپردیش کی رائے بریلی میں کانگریس کی سینئر لیڈر مسز گاندھی کو سماجوادی لیڈر راج نارائن نے پہلی بار شکست سے دوچار کیا۔ لوک دل کے ٹکٹ پر الیکشن لڑنے والے راج نارائن ایک لاکھ 77 ہزار 719 ووٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے جبکہ مسز گاندھی 122512 ووٹ لاکر الیکشن ہار گئی۔ اندرا گاندھی کے بیٹے سنجے گاندھی کو امیٹھی میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram