دہلی کی جامع مسجد میں ناچ گانااور کرتب بازی

دہلی کی جامع مسجد میں جاپانی لڑکیوں کے ذریئے ناچ گانے کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد بہت کچھ ہنگامہ ہوا  اس ضمن میں دو ویڈیو سامنے آئی ہیں جسمیں ایک میں دو لڑکیاں کرتب دکھارہی ہیں ناچ رہی ہیں اور دوسری میں ایک ہیجڑا ٹائپ لڑکا باقائدہ گانے پر ڈانس کر رہا ہے اور گانا ہے ایک پردیسی میرا دل لے گیا جاتے جاتے میٹھا میٹھا غم دے گیا ۔ویڈیو دیکھ کرعلاقے کے لوگوں میں غم و غصہ پھیل گیا اور جب سب طرف یہ ویڈیو پر شدید رد عمل آیا تو امام بخاری صاحب جاگے اور انتظامیہ حرکت میں آئی ہم اس طرح کے واقعات کی صرف مذمت ہی نہیں کرتے بلکہ جامع مسجد کے امام صاحب سے کچھ سوال بھی کرنا چاہتے ہیں پہلی بات تو یہ کہ جاپانی لڑکیاں جب ڈانس کر رہی تھیں تو انتظامیہ کہاں تھی وہاں کے منتظمین سوتے رہے ۔لڑکیاں ناچتی رہیں اور ویڈیو بنتی رہی۔ایسا کیسے ہوسکتا ہےجامع مسجد میں اندر باہر دربان رہتے ہیں پھر اتنی دیر تک کیسےٹک ٹاک کی ویڈیو بنتی رہی اور کسی نے روکا نہیں اور دوسری بات یہ کہ باقائدہ گانے کے ساتھ ناچ ہوتا رہا کسی نے امام صاحب کو خبر نہیں کی ۔
اصل میں جامع مسجد پوری طرح امام صاحب کی پرسنل ملکیت بن گئی ہے پوری مسجد میں لمبے لمبے جالے لٹک رہے ہیں اسکی صفائی ستھرائی بس واجبی سی ہے حوض بے حد گندہ ہے خواتین مسجد کے اندر تو آجاتی ہیں مگر ان کو مسجد کے صحن میں ننگےسر چہل قدمی کرنے سے روکنے والا کوئی نہیں ہے بچوں کے پیچھے ا ن عو رتوں کوبھاگتے دوڑتے دیکھا جاسکتا ہے ۔ جامع مسجد میں اب تو  محبت کرنے والے جوڑے بھی ملنے کا  پروگرام بنالیتے ہیں  یہی نہیں ا رمضان شریف میں افطار کرنے والے خاندانوں کے ذریعے جو بے حرمتی ہوتی ہے وہ بھی تشویشناک ہے ۔جامع مسجد کی انتظامیہ لگتا ہے سوتی رہتی ہے اس طرف توجہ دینا بہت ضروری ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest