موت اس کی ہے کرے جس پہ زمانہ افسوس

چنئی کے ایک ڈاکٹر کی موت پر پورا شہر غمگین، ۲؍روپے میں کرتے تھے علاج

چنئی:چنئی میں ایک ڈاکٹر جو مریضوں کا علاج صرف دو روپے میں کیا کرتے تھے، حالانکہ ان اس کام کےلیے بہت سارے لوگوں نے انہیں پیسے دینے کی کوشش کی ، لیکن انہوں نے ہمیشہ معذرت کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں صرف دوائیاں لا کر دے دیجئے، پیسے کا ہم کیا کریں گے۔ واقعی ایسے ہی ڈاکٹر کو خدا کا درجہ دیا جاتا ہے۔ایک ایسے ہی ڈاکٹر کی چنئی میں موت نے اپنی آغوش میں لے لیا، جس نے زندگی بھر دوسروں کے آنسوں آنے سے روکے۔ لیکن آج وہ خود کو نہیں بچاسکے۔ موت توبرحق ہے۔ اس سے کس کو رستگاری ہے۔ آپ کو بتادیں کہ ڈاکٹر کی موت پر پورا شہر غمگین ہے۔ ڈاکٹر ایس جياچندرن طویل علالت کے بعد چل بسے۔ وہ’لوگوں کے ڈاکٹر‘ نام سے مشہور تھے۔ گزشتہ ۴۰؍ سال سے وہ طبی خدمات کے ذریعے لوگوں کی مدد کر رہے تھے۔ دو روپے میں وہ لوگوں کا علاج کرتے تھے۔ پرانے واشرمین پیٹ کے ان کے گھر پر ہزاروں کی تعداد میں لوگ انہیں خراج عقیدت کیلئے پہنچے۔ جياچندرن کے بڑے بیٹے سراون جگن نے بتایا کہ، ’وہ گزشتہ کافی عرصے سے پھیپھڑو ںکے مسئلے سے گھرے ہوئے تھے۔ گرینس روڑ پر واقع ایک پرائیوٹ اسپتال میں ان کا علاج چل رہا تھا۔ جہاں انہوں نے بدھ کی صبح آخری سانس لی۔ جگن نے بتایا، وہ ہمیشہ دوسروں کی خدمت کرنے کے لئے کہا کرتے تھے۔ وہ کہتے تھے کہ شمالی چنئی کے لوگ اقتصادی طور پر کمزور ہیں جو مہنگا علاج نہیں کروا سکتے، اس لئے ہمیں ان کی مدد کرنی چاہئے ۔‘

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *