چوکیدار نہیں غمخوار وزیراعظم چاہیے

دیکھئے اس کو کہتے ہیں غمخوار وزیراعظم ، جیسی نیوزی لینڈ کی وزیراعظم ہیں۔ زبانی باتیں ، جھوٹے وعدے، دلفریب خواب دکھانے والے ہمارے ملک کو نیوزی لینڈ کی وزیراعظم سے سبق لینا چاہیے۔ 49لوگوں کی شہادت کے بعد پوری دنیا نے اس چھوٹے سے ملک کی وزیراعظم کا نام شاید پہلی بار ہی سنا ہوگا ، لیکن آج وہ نام پوری دنیا میں عقیدت واحترام کا مظہر بن گیا ہے ۔ وزیراعظم جینڈا آرڈن نے اس دردناک حادثے کے بعد جس طرح لواحقین کی دلجوئی کی ہے اور باقاعدہ حجاب کے ساتھ وہ ایک ایک عورت کے گلے ملی ہیں اس نے ان کی شبیہہ کو دنیا میں بے مثال کردیا ہے۔ جس ملک میں صرف ایک فیصد آبادی کا اتنا احترام کیا جائے اور ان کو اتنی اہمیت دی جائے وہ ملک بھی قابل تعریف ہے اور وہاں کے لیڈران بھی۔ یہی نہیں نیوزی لینڈ میں جب پارلیمنٹ سیشن شروع ہوا تو قرآن کی تلاوت سے پورا ہال گونج گیا۔ وہاں کے امام نے دیکھئے آیتوں کا بھی کیا غضب انتخاب کیا۔ سورہ بقرہ کی پانچ آیتیں ، 153سے 156تک جس میں مسلمانوں کو صبر اور نماز کی تلقین کی گئی ہے اور صرف اللہ سے مدد مانگنے کا حکم دیاگیا ہے۔ دوسری آیت وہ جس میں اللہ اپنے بندوں سے کہتا ہے کہ اللہ کے راستے میں مرنے والوں کو مردہ نہ کہو، بلکہ وہ زندہ ہیں، یہی نہیں وزیراعظم نے سیشن کا آغاز السلام علیکم سے کیا اور کہا کہ آپ مجھے کبھی اس دہشت گرد کا نام لیتے ہوئے نہیں سنیں گے وہ ایک دہشت گرد ہے مجرم ہے۔ اسے بے نام ہونا چاہیے۔ انھوں نے مسلمانوں کی حوصلہ دیتے ہوئے کہا کہ وہ جمعہ کی نماز پڑھیں گے اورہم ان کی حفاظت کے لیے کھڑے رہیں گے۔ نیوزی لینڈ میں جمعہ کو یوم یکجہتی منانے کا بھی اعلان کیا گیا ہے اور جمعہ کی اذان کا سرکاری ریڈیو اور ٹیلی ویژن پر براہ راست نشر کرنے کا بھی اعلان ہوا ہے۔
دیکھا آپ نے اس ملک کو جہاں صرف ایک فیصد مسلمان ہیں وہاں ان کی زندگی ان کے تحفظ کے لیے کیسے وہاں کے لوگ اور حکومت پوری طرح مضبوط چٹان کی طرح کھڑی ہے اور ہندوستان جہاں مسلمان دوسری بڑی اکثریت میں ہے وہاں ان کو جنگلی وحشت زدہ بھیڑ کے آگے تنہا چھوڑ دیا جاتا ہے کہ ماردو ، جلادو، کوئی پرسان حال نہیں۔ لاشیں سڑکوں پر پڑی رہتی ہیں اور ان کو کفن تک نصیب نہیں ہوتا۔
گنگا جمنی تہذیب ، انیکتامیں ایکتا، سمن ایک پھول انیک، مذاہب کا گہوارہ، یہ سب جملے یہ محاورے یہ باتیں سننے میں کتنی اچھی لگتی ہیں ، لیکن ان کو 70سالوں میں مسلمانوں نے کبھی نہیں جیا، ہمیشہ ان کو پاکستان کا طعنہ دیا جاتارہا، جس کی نسلیں آزادی کی لڑائی میں شہید ہوگئیں ان کو غدار کہہ دیا جاتا ہے۔ لاشوں پر سیاست ہوتی ہے۔ نیوزی لینڈ نے آج پوری دنیا میں خود کو منوالیا ہے۔ چھوٹے سے ملک نے بڑا دل دکھا کر دنیا کو جیت لیا ہے۔ ہم نیوزی لینڈ کو سلام کرتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest