بچوں کے خلاف ہونے والے پرتشدد واقعات پر روک لگانے کی سمت میںاقوام متحدہ کا بہترین قدم

بچوں کے خلاف ہورہے تشدد کی روک تھام کے لیے ہرممکن کوشش ہورہی ہے۔ اس کے لیے نہ جانے کتنی ساری ایجنسیاں اور این جی اوز کام کررہے ہیں۔ اسی سمت میں اقوام متحدہ نے دیگر ایجنسیوں کے ساتھ مل کر ایک بہترین قدم اٹھایا ہے۔ جس کی جتنی بھی تعریف کی جائے وہ کم ہے۔ تفصیلات کے مطابق عالمی ادارہ صحت (ڈبليوایچ او) اور اقوام متحدہ بین الاقوامی کےانٹر نیشنل چلڈرینزایمرجنسی ریلیف فنڈ نے دنیا میں بچوں کے خلاف ہونے والے پرتشدد واقعات پر روك لگانے کے لئے سات نکاتی پروگرام (’ سیون اسٹریٹیجیز فار وائلینس اگینسٹ چلڈن) انسپائر کی شروعات پر رضامندی ظاہر کی ہے۔ایشیا اور پیسیفک علاقے کے 21 ممالک کے نمائندے ان دنوں یہاں ایک پروگرام میں حصہ لے رہے ہیں جس کا مقصد بچوں کے خلاف ہونے والے پرتشدد واقعات پر روک لگانے کی سمت میں قدم اٹھانا ہے۔ یہ پروگرام 31 اکتوبر سے یکم نومبر تک جاری رہے گا۔ایک اندازے کے مطابق دنیا میں کم از کم ایک ارب بچے ہر سال کسی نہ کسی طور پر تشدد کا سامنا کر رہے ہیں اور ایشیا میں پچھلے سال 50 فیصد بچوں کو پرتشدد واقعات کا سامنا کرنا پڑا تھا۔بین الاقوامی برادری نے سال 2030 تک بچوں کے خلاف تشدد کو روکنے کے عزم کا اظہار کیا ہے اور پائیدار ترقی کے مقاصد کو حاصل کرنے کی سمت میں ایک ہد ف مقرر کیا گیا ہے۔ اسے حاصل کرنے کے لئے اقوام متحدہ کی دس ایجنسیوں نے مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram