اب جاوید اخترنشانے پر۔مقدمہ دائر ۔جانئے کیا ایسا کہ دیا انھوں نے

بہار میں بیگو سرائے ضلع کی ایک عدالت میں معروف نغمہ نگار اور مصنف جاوید اختر کے خلاف شکایتی مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔
شکایت کرنے والے نے تعزیرات ہند کی دفعہ 124۔اے، 153-اے اور 153-بی میں یہ شکایت داخل کی ہے۔ شکایتی مقدمے میں دہلی تشدد پر جاوید کے بیان کو دو فرقوں کے درمیان بدنظمی پھیلانے والا بتاتے ہوئے ان کے عمل کو غداری کے زمرے میں شامل کیا گیا ہے۔ شکایتی خط منظوری کے نکات پر آج سماعت ہوئی۔ اس معاملے میں اگلی سماعت 25 مارچ کو ہوگی۔
شکایت کنندہ نے اپنے شکایتی خط میں کہا ہے کہ جاوید اختر نے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ دہلی میں کئی لوگ مارے گئے، گھر پھونکے گئے، دكانیں لوٹی گئی لیکن پولیس صرف ایک گھر کو سیل کرکے مالک کو تلاش کر رہی ہے، اتفاق سے اس کا نام طاہر ہے، دہلی پولیس کو سلام۔ شکایت کنندہ کا کہنا ہے کہ دہلی میں ہوئے تشدد کے تعلق سے جاوید اختر کا بیان پڑھنے سے واضح ہوتا ہے کہ وہ ہندوستان کو ذات فرقے کے نام پر بانٹنے کا کام کر رہے ہیں۔ایسا لگتا ہے اب سچ بات کہنے والا ہی سب سے بڑا ملزم ہے ۔ابھی تک کپل مشرا کھلے عام گھوم رہا ہے جس نے یہ آگ لگائی تھی ۔اور معصوم لوگ بے گناہ ہوکر بھی گناہ گار ہوگئے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *