بجٹ 2019 : چھوٹے کسانوں کو مودی حکومت کا تحفہ ، ہر سال دے گی 6 ہزار روپے کی مدد

بجٹ ۲۰۱۹ء میں مودی سرکار نے کسانوں کو لے کر بڑااعلان کیا ہے۔ کسانوں کے ایشوز پر مودی سرکار لگاتار دبائو میں تھی۔ ایسے میں سرکار نے کسانوں کی ناراضگی کو دور کرکے اورانہیں اقتصادی بحران سے باہر نکالنے کی سمت میں بڑا قدم اٹھایا ہے۔ کسانوں کو چھہ ہزار روپے ہر سال کی شرح سے مدد کرنے کااعلان کیا ہے۔واضح رہے کہ پردھان منتری کسان یوجنا کے تحت چھوٹے کسان جن کے پاس دو ہیکٹیئر زمین ہے ، ان کے بینک کھاتے میں براہ راست چھ ہزار روپے سالانہ دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ تین قسطوں میں دو ہزار روپے کرکے کسانوں کے بینک کھاتے میں براہ راست ڈالے جائیں گے ۔مرکز کی مودی حکومت آج پارلیمنٹ میں اپنا عبوری بجٹ پیش کررہی ہے ۔ یہ عبوری بجٹ پیوش گوئل پیش کررہے ہیں ۔ بجٹ تقریر کے دوران انہوں نے کہا کہ پردھان منتری کسان یوجنا کے تحت چھوٹے کسان جن کے پاس دو ہیکٹیئر زمین ہے ، ان کے بینک کھاتے میں براہ راست چھ ہزار روپے سالانہ دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ تین قسطوں میں دو ہزار روپے کرکے کسانوں کے بینک کھاتے میں براہ راست ڈالے جائیں گے ۔ 12 کروڑ کسانوں کو اس کا براہ راست فائدہ ملے گا ۔ پہلی قسط بہت جلد بھیجی جائے گی ۔ یہ اسکیم یکم دسمبر 2018 سے نافذ ہوگی ۔ بجٹ سے متعلق لائیو اپ ڈیٹس کیلئے ہمارے ساتھ وابستہ رہیں ۔ لوک سبھا میں ارون جیٹلی کی جگہ وزارت خزانہ سنبھال رہے پیوش گوئل اس بار اسپیچ پڑھیں گے۔ روایت کے مطابق، انتخابات کے بعد آنے والی حکومت ہی مکمل بجٹ پیش کرےگی۔ مانا جا رہا ہے کہ مودی حکومت بجٹ میں یونیورسل بیسک انکم کا اعلان کر سکتی ہے۔ حال ہی میں راجستھان حکومت نے اسے نافذ کیا ہے۔ علاوہ ازیں انکم ٹیکس میں چھوٹ کی حد کو بھی بڑھایا جا سکتا ہے۔ نریندر مودی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت کے موجودہ مدت کار میں یہ آخری بجٹ ہوگا۔گزشتہ ہفتے ہی ریلوے وزیر پیوش گوئل کو وزارت خزانہ کا عبوری بجٹ پیش کرنے کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ اس سے پہلے وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے پانچ بجٹ پیش کئے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest