بی جےپی کے سینئر لیڈر اجے سنگھ کا الزام،پارٹی کے غلط فیصلے اور بیان بازی سے اقتدار گنوایا

گوالیار:حالیہ دنوں میں ہوئے مدھیہ پردیش اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی شکست کے بعد پارٹی میں رسہ کشی جاری ہے۔ ایک دوسرے پر الزام تراشی کا دور عروج پر ہے۔ حالانکہ پارٹی کے سینئر لیڈران شکست کو اپنے سر لینے کو تیار نہیں ہے۔ جب کہ ان کے مقامی لیڈروں کا کہنا ہے کہ شکست اعلیٰ قیادت کی وجہ سے ہوئی ہے۔ اس سلسلے میں بی جے پی کے ہی ایک سینئر لیڈر اجے سنگھ کشواہا نے اپنی ہی پارٹی کی اعلیٰ قیادت کے بارے میں کہا کہ اس کے غلط فیصلے اور بیان بازی کے سبب ہی پارٹی کو اقتدار گنوانا پڑا ہے ۔مسٹر کشواہا نے کل یہاں جاری ایک ریلیز میں کہا کہ پندرہ سال سے ریاست میں برسر اقتدار بی جے پی کو اس کے کارکنوں کے غلط فیصلے، من چاہے اور سخت بیان بازی کرنے سے اقتدار گنوانا پڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دو سال قبل ریوا میں ہوئی ریاستی ورکنگ کمیٹی کے میٹنگ میں انہوں نے سماجی ہم آہنگی کا معاملہ اٹھایا تھا۔سینئر لیڈر نے کہا کہ عام طبقے کی ناراضگی دور کرنے کے بجائے ٹکٹوں کی تقسیم میں من مانی کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی پالیسیاں اور عوامی بہبود کے منصوبے تو بہتر تھے۔ جن لاکھوں لوگوں نے فائدہ بھی اٹھایا، لیکن اعلی قیادت پارٹی اور کچھ رہنماؤں کے تئیں لوگوں کی ناراضگی کا اندازہ نہیں لگا پائی ۔ انہوں نے کہا کہ اب انتخابات میں جن امیدواروں کو شکست ہو ئی ہے ، وہ دیگر سینئر رہنماؤں کو اپنی ہار کے لئے مورد الزام نہ ٹھہرائیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *