بے روزگاری نے ہندوستان میں ڈھائی سال کا ریکارڈ توڈ دیا مودی حکومت نے گمراہ کیا

۔ ممبئی میں ایک تھنک ٹینک کے سربراہ مہیش ویاس نے رائٹرز سے بات چیت میں بتایا کہ بے روزگاری کی شرح میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے
ہندوستان میں بےروزگاری کی شرح فروری مہینے میں بڑھ کر ڈھائی سال کی اونچی سطح پر پہنچ گئی ہے۔ سینٹر فار مانیٹرنگ انڈین اکانومی ( سی ایم آئی ای) کے جاری اعداد و شمار کے مطابق، فروری 2019 میں بے روزگاری کی شرح 7.2 فیصدی تک پہنچ گئی۔ یہ ستمبر 2016 کے بعد سب سے زیادہ ہے۔ گزشتہ سال ستمبر میں یہ اعداد و شمار 5.9 فی صدی تھے۔۔مہیش ویاس نے رائٹرز سے بات چیت میں بتایا کہ اضافہ ایک ایسے وقت میں ہوا ہے جب نوکری تلاش کرنے والوں کی تعداد کم ہ ہوئی ہے سی ایم آئی ای نے یہ اعداد وشمار منگل کو جاری کئے۔ ۔ مہیش ویاس نے بتایا کہ گزشتہ سال فروری میں 40.6 کروڑ لوگ کام کر رہے تھے جبکہ اس سال یہ اعداد وشمار 40 کروڑ ہیں۔
اس سال اپریل۔ مئی میں لوک سبھا انتخابات ہونے ہیں۔ ایسے میں بے روزگاری کا یہ مسئلہ مودی حکومت کے سامنے بڑا چیلنج پیش کر سکتا ہے۔ ماہرین معاشیات کا بھی ماننا ہے کہ سی ایم آئی ای کے یہ اعدادو شمار حکومت کی طرف سے پیش کئے گئے بے روزگاری کے ڈیٹا کے مقابلہ میں زیادہ معتبر ہیں۔ یہ اعداد وشمار ملک بھر کے ہزاروں کنبوں سے کئے گئے سروے کی بنیاد پر تیار کئے جاتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest