بالاکوٹ حملے کے بعد بی جے پی رام مندر تعمیرکرنا بھول گئی ہے:فاروق عبداللہ

سری نگر: نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ بالاکوٹ حملے کے بعد بی جے پی رام مندر تعمیرکرنا بھول گئی ہے۔ پارٹی ہیڈکواٹر نوائے صبح کے احاطے میں ہفتہ کے روز ایک انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ یہ الیکشن صرف جموں وکشمیر کے بچاؤ کے لئے ہی ضروری نہیں ہے بلکہ ہندوستان کے بچاؤ کے لئے بھی اہم ہیں اُس سیکولر ہندوستان کے لئے جس میں ہم عزت سے رہ سکیں اور جہاں ہماری مائیں اور بہنیں عزت سے رہ سکیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ فاروق عبداللہ کا سوال نہیں ہے یہ وطن کا سوال ہے کہ کیا ہم وطن کو اس طوفان سے بچا سکتے ہیں جس میں مذہبوں کی لڑائی ہے اور ہمارا مذہب اسلام ہمیں برابری کا درس دیتا ہے۔انہوں نے کہاکہ پہلے (بی جی پے والے ) کہتے تھے کہ ہم نے مندر بنانا ہے، وہ مندر کہاں گیا؟ اُس مندر کو بالاکوٹ نے کھایا، بالاکوٹ میں جو ہوا یہ لوگ مندر ہی بھول گئے۔فاروق عبداللہ نے وزیر اعظم نریندر مودی کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ چھتیس گڑھ میں ہندوستان کے کتنے سپاہی شہید ہوئے، کیا مودی جی وہاں گئے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پر حملہ کرنے کی کوشش کی گئی اور پھر کسی نے کہا ہم نے تین سو مارے کسی نے کہا پانچ سو مارے تو کسی نے کہا ہزار مارے اور یہ بھی کہا گیا کہ جہاز کو بھی گرایا یہ سب صرف اپنی بہادری کو دکھانے کے لئے کیا کہ میں کیا کرسکتا ہوں۔ اب انہوں نے کیس کیا ہے کہ ہمارے درخت گرائے گئے ہیں۔نیشنل کانفرنس کے صدر نے کہا ‘مودی جی نے ان ہی جھوٹوں سے کوشش کی کہ کسان اپنی خراب حالت کو بھول جائیں، لوگ مہنگائی کو بھول جائیں اور نوکریوں کو بھول جائیں۔انہوں نے کہا کہ جو میزائیل سٹیلائٹ کو گرانے کے لئے استعمال کیا گیا دراصل ملک کے سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ نے بنایا تھا لیکن آپ نے اعلان نہیں کیا تھا۔فاروق عبداللہ نے کہا جب الیکشن تھا تو یہ دکھانے کے لئے کہ ہنومان جی تشریف لائے ہیں اُس (مودی جی) نے بٹن دبایا اور ایک بٹن غلط دب گیا جس کی وجہ سے ہیلی کاپٹر گر گیا اس میں ہمارے چھ ایئر فورس کے جوان شہید ہوئے اور ایک عام شہری جو گانا سن رہا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest