حلقہ ارباب ذوق کے زیر اہتمام اسلم چشتی کے اعزاز میں یمنا وہار میں ایک شعری نشست کا انعقاد

نئی دہلی:ـدہلی کی معروف ادبی تنظیم حلقہ ارباب ذوق کے زیر اہتمام اسلم چشتی کے اعزاز میں یمنا وہار میں ایک شعری نشست کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت میکش امروہوی اور نظامت مہمان شاعر ڈاکٹر افروز طالب نے کی۔مہمان خصوصی کے طور پر سماجی و سیاسی کارکن راجا بھائی( چوڑی والے)نے شرکت کی جبکہ شمع افروزی کے فرائض آصف نظر نے انجام دئے ۔ اس موقع پر میکش امروہوی نے اپنے صدارتی خطبہ میں مشاعرہ کے گرتے ہوئے معیار پر تفصیلی گفتگو کی او ر کہا کہ اردو ادب کو فرو غ و استحکام بخشنے میں ایسی ہی نشستوں کا اہم رول ہے جہاں عمدہ اور مرصع کلام سننے کو ملتے ہیں۔میزبان سعید منتظرنے اسلم چشتی کا استقبال گلپوشی اور رادئے ادب سے کیا ساتھ ہی دیگر مہمانان شعرا کی گلپوشی کی۔نشست کا آغاز سعید منتظر نے حمد اور وارث وارثی نے نعت رسول پاک سے کیا۔جن شعرا نے اپنے کلام سے نوازا ان کے منتخب اشعار کی خدمت میں پیش ہیں۔
مری نگاہ بدن پر ٹھہر گئی ورنہ
وہ اپنی روح مرے نام کرنے والا تھا
میکش امروہوی
بہت مغرور تھے کل تک جو اپنی بادشاہی پر
عجائب گھر میں اب ان کے نظرکنکال رکھے ہیں
آصف نظر
وہی مسند پہ قابض ہوگئے ہیں
جنہیں جیلوں میں ہونا چاہئے تھا
اسلم چشتی
پھول پھینکو نہ مجھ پہ ہنس ہنس کے
؎چھوٹ لگ جائے گی کہیں نہ کہیں
سعید منتظر
اسے جنون ہے اے سیف خود پسندی کا
عجیب شخص ہے اپنا طواف کرتا ہے
سیف سحری
بھیڑ نے پھر تشدد بپا کردیا
پھر کسی ماں کا لخت جگر سوگیا
امیر امروہوی
وہ جو ماں نے کبھی دعا دی تھی
آج تک اس کا فیض جاری ہے
وارث وارثی
ٹوٹا ہوا اپنوں کا بھرم دیکھ رہے ہیں
اغیار کو مائل بہ کرم دیکھ رہے ہیں
ڈاکٹر افروز طالب
چاند اترا ہے مری چھت پہ بڑی کوشش سے
اے خدا آج تو یہ وقت رکا رہنے دے
سیما اقبال ادا
خود کو تنہا کہیں نہ کرلو تم
مبتلا ہو کے بدگمانی میں
جاوید مشیری
یہ اعلیٰ ظرفی بزرگوں سے ہم نے پائی ہے
بلندیوں پہ پہنچ کر زمین پر رہنا
سرتاج امروہوی
ملی ذرا سی جو شہرت تو ہوگئے مغرور
تمہیں خبر بھی ہے آگے زوال رکھا ہے
فرید احمد فرید
ترے سلوک نے گمنام کردیا مجھ کو
میں تیری بزم میں مشہور ہونے آیا تھا
فرحت اللہ خاں فرحت
نشست کے اختتام پر کنوینر سرتاج امروہوی نے تمام مہمانان و شعرائے کرام کا شکریہ ادا کیا۔
کیپشن۔۔سعید منتظر اسلم چشتی کی گلپوشی کرتے ہوئے ساتھ میں میکش امروہوی،امیر امروہوی،راجابھائی ودیگر

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *