شوپیان میں مسلح تصادم، سابق فوجی سمیت حزب المجاہدین کے 2 جنگجو ہلاک

جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان کے زین پورہ میں منگل کی علی الصبح جنگجوؤں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان مسلح تصادم ہوا۔ جس میں ایک سابق فوجی سمیت حزب المجاہدین کے دو جنگوؤں کو ہلاک کیا گیا۔ریاستی پولیس کی جانب سے مسلح تصادم میں مارے گئے جنگجوؤں کی شناخت محمد ادریس سلطان عرف چھوٹا ابراہیم ولد محمد سلطان ساکنہ صفانگری شوپیان اور عامر حسین راتھر عرف ابو صوبان ولد محمد امین راتھر ساکنہ آونیرہ شوپیان کے بطورکی گئی ہے۔ ان میں سے ادریس نے رواں برس اپریل میں فوج کی جیکلی چھوڑ کر حزب المجاہدین کی صفوں میں شمولیت اختیار کی تھی۔ وہ بہار میں تعینات تھا۔انتظامیہ نے مسلح تصادم میں جنگجوؤں کی ہلاکت کے پیش نظر ضلع شوپیان میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات منقطع کرادی ہیں۔ریاستی پولیس کے ایک ترجمان نے مسلح تصادم کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ شوپیان کے صفانگری زین پورہ میں جنگوؤں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر ریاستی پولیس اور سیکورٹی فورسز نے مذکورہ علاقہ میں منگل کی علی الصبح کارڈن اینڈ سرچ آپریشن شروع کیا۔ انہوں نے کہا کہ تلاشی آپریشن کے دوران علاقہ میں چھپے بیٹھے جنگجوؤں نے سیکورٹی فورسز پر فائرنگ کی۔ سیکورٹی فورسز کی جوابی فائرنگ کے بعد طرفین کے مابین مسلح تصادم چھڑ گیا۔پولیس ترجمان نے کہا کہ مسلح تصادم میں حزب المجاہدین سے وابستہ دو مقامی جنگجو مارے گئے۔ انہوں نے کہا کہ مسلح تصادم کے دوران فورسز اور شہریوں کا کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ علاقہ میں تلاشی آپریشن جاری ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest

RSS
Follow by Email
Facebook
Twitter
Pinterest
LinkedIn
Instagram