سماجی کارکن اناہزارے ۳۰؍ جنوری سے بھوک ہڑتال کریں گے

نئی دہلی:مشہور و معروف سماجی کارکن انا ہزار ایک بار پھر سے بھوک ہڑتال کرنے جارہے ہیں۔ آپ کو بتادیں سماجی کارکن انا ہزارے یہ آندولن دہلی میں نہیں بلکہ اپنے گاؤں رالے گڑھ سدھی میں کریں گے۔ انا ہزارے نے تمام سیاسی پارٹیوں سے اس انشن سے دور رہنے کی اپیل کی ہے۔ واضح رہے کہ کچھ دنوں پہلے اناہزارے نے وزیراعظم مودی کو خط لکھ کر لوک آیکت کی تقرری کا مطالبہ کیا تھا۔ ہفتہ کو انہوں نے کہا کہ ۲۰۱۳ء میں لوک پال قانون بنایا گیا تھا، اس کے بعد ۲۰۱۴ء میں بی جے پی حکومت اقتدار میں آئی، ہمیں امید تھی کہ اب کچھ ہوگا لیکن پانچ سال میں کچھ بھی نہیں ہوا، اس لیے طے کیا ہے کہ میں ۳۰؍ جنوری سے اپنے گاؤں رالے گڑھ سدھی میں بھوک ہڑتال پر بیٹھوں گا۔ پچھلے دنوں انا ہزارے نے وزیراعظم نریندر مودی کے نام ایک خط لکھا تھا جس میں لوک آیکت کی تقرری کی بات کہی گئی تھی۔ انا نے اپنے خط میں الزام لگایا تھاکہ مرکز کی مودی سرکار ملک کے عوام کے ساتھ دھوکہ دھڑی کر رہی ہے۔ لوک پال اور لوک آیکت جیسے اہم قانون پر عمل نہیں ہونا اور حکومت کا بار بار جھوٹ بولنا وہ برداشت نہیں کرسکتے۔ اس لیے میں نے مہاتما گاندھی کی برسی کے موقع سے آندولن کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ اپنے خط میں انا نے کہاکہ ہمارے ملک میں آئین کو سب سے اوپر درجہ دیا گیا ہے، لیکن حکومت اس پر عمل نہیں کررہی ہے جس کی وجہ سے ملک کی جمہوریت کو خطرہ ہوگیا ہے۔ سماجی کارکن اناہزارے نے لکھا کہ پچھلی بار کے آندولن سے سبق لیتے ہوئے سبھی سیاسی پارٹیوں کو واضح کردینا چاہتا ہوں کہ وہ اس آندولن میں شامل نہ ہوں، لیکن ایسا مانا جارہا ہے کہ ان کے کچھ پرانے ساتھی یوگیندر یادو، پرشانت بھوشن اور کمار وشواس اس آندولن میں حصہ لے سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest