آلوک ورمامعاملہ

فیصلے کے لئے سلیکشن کمیٹی میں چیف جسٹس نہیں، اے کے سیکری سلیکشن کمیٹی کے ممبر نامزد

نئی دہلی:ہندوستان کے چیف جسٹس رنجن گگوئی نے آلوک ورما پر لگے الزامات کا معاملہ دیکھنے کے لئے سپریم کورٹ کے سینئر جج اے کے سیکری کو سلیکشن کمیٹی کا ممبر بنایا ہے۔ بتایا جاتاہےکہ انہوں نے ایسا اس لئے کیا تاکہ ‘ مفادات کے ٹکراؤ ‘ سے بچا جا سکے۔ چونکہ جسٹس رنجن گگوئی نے آلوک ورما کو سی بی آئی چیف کے طور پر بحال کرنے کا حکم دیا تھا اس لئے انہوں نے ورما پر لگے الزامات کا معاملہ دیکھنے کے لئے دیگر جج کو مقرر کیا ہے۔واضح رہےکہ سی بی آئی ڈائریکٹر کی تقرری / ٹرانسفر والی سلیکشن کمیٹی میں ہندوستان کے وزیر اعظم، چیف جسٹس یا چیف جسٹس کے ذریعے نامزد سپریم کورٹ کے جج اور لوک سبھا میں حزب مخالف کے رہنما ہوتے ہیں۔ گزشتہ روز سپریم کورٹ نے سی بی آئی ڈائریکٹر آلوک کمار ورما کو ان کے اختیارات سے محروم کرکے چھٹی پر بھیجنے کے مرکزی حکومت کے فیصلے کو خارج کر دیاتھا ۔حالانکہ سپریم کورٹ نے سی وی سی کی تفتیش پوری ہونے تک ورما پر کوئی بھی بڑا فیصلہ لینے پر روک لگا دی ہے۔ عدالت نے ڈی ایس پی ای ایکٹ کے تحت اعلیٰ اختیارات والی کمیٹی (سلیکشن کمیٹی یا ہائی پاورڈ کمیٹی) سے اس معاملے میں ایک ہفتے کے اندر فیصلہ لینے کو کہا ہے۔ عدالت نے یہ بھی کہا کہ اب آلوک ورما سی بی آئی دفتر جا سکتے ہیں، لیکن کمیٹی کے آخری فیصلہ دینے تک وہ کوئی بڑا پالیسی سے متعلق حکم نہیں دے سکتے۔ حالانکہ وہ روز مرہ کے کام کاج میں ایڈمنسٹریٹو فیصلے لیں‌گے۔آلوک ورما پر لگے الزامات پر فیصلہ کرنے کے لئے حکومت جلد سے جلد سلیکشن کمیٹی کی میٹنگ بلانا چاہ رہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Pin It on Pinterest